Wednesday , November 21 2018
Home / Top Stories / غیربی جے پی پارٹیوں کا یکساں قومی اتحاد ناممکن : شرد پوار

غیربی جے پی پارٹیوں کا یکساں قومی اتحاد ناممکن : شرد پوار

ممبئی۔ 23 اکتوبر (سیاست ڈاٹ کام) این سی پی صدر شرد پوار نے آج بیان دیا کہ قومی سطح پر غیربی جے پی پارٹیوں کا یکساں اتحاد ناممکن ہے جو نریندر مودی حکومت کا مقابلہ کرسکے، لیکن اس کے باوجود انہوں نے کہا کہ وہ مختلف پارٹیوں کو ایک مشترکہ پلیٹ فارم پر لانے کی سعی کررہے ہیں۔ رام مندر کی تعمیر کے بی جے پی موضوع کے بارے میں انہوں نے بی جے پی بالواسطہ تنقید کرتے ہوئے کہا کہ چونکہ ترقیاتی ایجنڈہ ناکام ہوچکا ہے، اس لئے اس نزاعی مسئلہ کو دوبارہ زندہ کیا جارہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ آئندہ انتخابات کے بعد مرکز اور مہاراشٹرا میں حکومت تبدیل ہوگی اور نریندر مودی وزیراعظم نہیں رہیں گے۔ اس سوال پر کہ بی جے پی زیرقیادت اگر نئی حکومت بنتی ہے تو کیا وہ نیتن گڈکری کو بحیثیت وزیراعظم قبول کریں گے؟ انہوں نے نفی میں جواب دے کر کہا کہ کسی بھی بی جے پی اتحاد فرد کی وہ حمایت نہیں کریں گے، اس کے علاوہ انہوں نے کہا کہ ایچ ڈی دیوے گوڑا اور اندر کمار گجرال اتفاقی طور پر وزرائے اعظم بن گئے تھے لیکن اب ایسے اتفاقات کی وہ نہی تائید کریں گے اور نہ ہی اس کا حصہ بنیں گے۔ آج تک نیوز چیانل کی جانب سے چلائے گئے ’’ممبائی منتھن‘‘ کے موقع پر انہوں نے کہا کہ چونکہ ہر ریاست کی ایک مختلف نوعیت ہے اور وہاں کی پارٹیاں بھی مختلف ہیں چنانچہ یہی وجہ ہے کہ سب کو ایک پلیٹ فارم پر قومی سطح پر لانا ناممکن ہے اور ملک کا موجودہ ماحول 2004 ء ہی کی طرح ہے اور آئندہ انتخابات کے بعد مرکز اور مہاراشٹرا میں حکومتیں تبدیل ہوجائیں گی اور مرکز میں نریندر مودی دوبارہ وزیراعظم بنیں گے۔ صدر این سی پی نے مزید کہا کہ کسی نے بھی سوچا نہیں تھا کہ منموہن سنگھ وزیراعظم بنیں گے لیکن غیرمتوقع طور پر ہندوستان کو 10 سالہ مستحکم حکومت فراہم کی اور اٹل بہاری واجپائی کی زیرقیادت بی جے پی حکومت نے ہندوستان کو اعلیٰ قیادت فراہم کی۔ وہ مودی نہیں کرسکے، لیکن آج کی سیاست میں سیاست دانوں کی خلا نہیں ہے اور آج بھی متبادل موجود ہیں۔ ان سوال کیا گیا تھا کہ بقول چدمبرم کانگریس، راہول گاندھی کو وزیراعظم کے طور رپ پیش نہیں کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ وہ چدمبرم کا نقطہ نظر ہے، اُن کا نہیں۔ جب ان سے دریافت کیا گیا کہ این سی پی پر آبپاشی پراجیکٹس میں بدعنوانیوں میں ملوث تھی تو انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت چار سال سے زیراقتدار ہے تو پھر کوئی بھی ایکشن کیوں نہیں لیا گیا؟ این سی پی پر ایک خاندانی پارٹی کے لیبل چسپاں کرنے کے جواب میں انہوں نے کہا کہ آئندہ مدھیہ پردیش انتخابات میں شیوراج سنگھ چوہان نے اپنے بیٹے کو امیدوار نامزد کیا ہے تو وہ کیا ہے؟ انہوں نے کہا کہ ان کی پارٹی اور عوام ان کے جانشین کا فیصلہ کریں گے۔

TOPPOPULARRECENT