Friday , October 19 2018
Home / شہر کی خبریں / غیر علاقائی حکمرانوں کی سازش کے باوجود تلنگانہ کی لسانی تہذیب محفوظ

غیر علاقائی حکمرانوں کی سازش کے باوجود تلنگانہ کی لسانی تہذیب محفوظ

تلنگانہ کی تاریخ پر کتب کا رسم اجراء ، سرکردہ شخصیتوں کا خطاب
حیدرآباد۔15ڈسمبر(سیاست نیوز) غیرعلاقائی حکمرانوں کی سازش کے باوجود تلنگانہ کی لسانی تہذیب کو نقصان نہیںہوا ۔ اس کام کو تلنگانہ کے دانشوروں‘ شاعروں اور ادیبوں اور مصنفوں نے اس کو بچانے میںاہم رول ادا کیاہے۔ ساٹھ سالوں تک تلنگانہ کی لسانی تہذیب کو درکنار کرنے کی کوششیں کی جاتی رہی مگر آج بھی تلنگانہ کی لسانی تہذیب پورے دم خم کے ساتھ کھڑی ہوئی ہے۔ تلنگانہ میںآج عالمی تلگو کانفرنس کا انعقاد عمل میںآرہا ہے جو حکومت تلنگانہ کا ایک عظیم کارنامہ ہے ۔ ماضی میںبھی تلگو کانفرنسوں کا انعقاد عمل میںآیا مگر تلنگانہ کے دانشوروں کو ہمیشہ سے نظر انداز کیاجاتارہا ۔ اس بار تلنگانہ میں لسانی تہذیب کو تحفظ فراہم کرنے کی جدوجہد کرنے والے دانشوروں کو پذیرائی ہوگی۔ رکن پارلیمنٹ نظام آباد و صدر تلنگانہ جاگرتی شریمتی کے کویتا نے بیگم پیٹ ‘ ٹورازم پلازہ میں تلنگانہ ریسورس سنٹر کے زیراہتما م منعقد تقریب سے خطاب کے دوران یہ بات کہی۔ ٹی آر ایس کے زیراہتمام تلنگانہ کی تاریخ ‘ تہذیب اور ثقافت پر مشتمل کتابوں کی 25ویں رسم اجرائی تقریب منعقد کی گئی تھی جس کی نگرانی مسٹر بی نرسنگ رائو نے کی ۔ ان کے علاوہ چیرمن تلنگانہ پبلک سرویس کمیشن مسٹر گھنٹہ چکرا پانی‘ چیرمن تلنگانہ پریس اکیڈیمی مسٹر الم نارائن‘ ایڈیٹر آندھرا جیوتی مسٹرکے سرینواس‘ممتاز مورخ سنگی شیٹی سرینواس‘ چیرمن تلنگانہ ریسورس سنٹر ایم ویدا کمار‘ ڈاکٹر ایس نارائن ریڈی‘ ڈاکٹر کوشالا پرتاپ‘ ڈاکٹر شرون سری ہری‘ ڈاکٹر این سدھا ریڈی‘مسٹر اے وینو گوپال کے علاوہ دیگر نے بھی اس تقریب میںشرکت کی۔ کویتا نے سلسلے خطاب کو جاری رکھتے ہوئے کہاکہ تلنگانہ میں کتابوں کے مطالعہ کی روش عام ہے اور اس لئے ہمارے مورخین ‘ مصنفوں اور شاعروں نے تلنگانہ کی تاریخ پر بے شمار کتابیںلکھی جو عوام میںمقبول بھی ہوئی۔ انہوں نے کہاکہ تلنگانہ تحریک میںلسانی شعبہ سے وابستہ لوگوں کا اہم کردار رہا ہے جس کو کبھی فراموش نہیںکیاجاسکے گا۔مسٹر نرسنگ رائو تلنگانہ کی لسانی تہذیب کے متعلق پائی جانے والی بدگمانیوں کو دور کرتے ہوئے کہاکہ غیرعلاقائی حکمران او ردانشور ہماری لسانی تہذیب کا مذاق اڑاتے ہیں۔انہوں نے کہاکہ ان کے تمام دعوے بے بنیاد او رغلط ہیں۔ مسٹر نرسنگ رائو نے مزیدکہاکہ تلنگانہ کی ایک وسیع اور عظیم لسانی تہذیب ہے ۔جس کی حفاظت میںہمارے دانشوروں نے بہت ہی اہم رول ادا کیاہے۔ چیرمن ٹی ایس پی ایس سی مسٹر گھنٹہ چکر اپانی نے اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے تلنگانہ ریسور س سنٹر کی جانب سے کتابوں کی اشاعت کے عمل کو قابل ستائش قراردیا۔ ممتاز مورخ سنگی شیٹی سرینواس نے کہاکہ غیرعلاقائی حکمرانوں نے تو تلنگانہ کی لسانی تہذیب کو مکمل طور سے فراموش کردیاتھا ۔نئی کتابوں اور دکن لینڈ ڈسمبر شمارے کی رسم اجرائی شریمتی کے کویتا کے ہاتھوں عمل میںآئی۔

TOPPOPULARRECENT