Sunday , November 19 2017
Home / شہر کی خبریں / غیر مجاز ڈرائیونگ اسکولس ، خطرہ کی گھنٹی

غیر مجاز ڈرائیونگ اسکولس ، خطرہ کی گھنٹی

حیدرآباد ۔ 15 ۔ فروری : ( سیاست نیوز) : غیر مجاز ڈرائیونگ اسکولس عوام کی زندگی کے لیے خطرہ بن چکے ہیں کیونکہ یہ ڈرائیونگ اسکولس شہریوں کو غیر سائنٹفک ٹریننگ دے رہے ہیں ۔ ایسے بیشتر اسکولس مقررہ قواعد کی پابندی نہیں کررہے ہیں ۔ قواعد کی عدم پابندی کی وجہ سے نامناسب ٹریننگ پانے والے امیدوار ٹریفک میں گاڑی چلاتے ہوئے لڑکھڑا جاتے ہیں ۔ اس کے نتیجہ میں جان لیوا حادثات پیش آتے ہیں ۔ سرکاری ذرائع کے بموجب ریاست میں تقریبا پانچ سو ڈرائیونگ اسکولس ہیں ان میں تین سو اسکولس حیدرآباد اور رنگاریڈی اضلاع میں ہیں ۔ تین بیشتر ڈرائیونگ اسکولس میں مناسب انفراسٹرکچر ساز و سامان اور کوالیفائیڈ انسٹرکٹرس موجود نہیں ہیں ۔ سابق آندھرا پردیش ہائی کورٹ کی ہدایات کے مطابق محکمہ ٹرانسپورٹ نے دس سال قبل ڈرائیونگ اسکولس کے قیام کے لیے رہبر اصول جاری کئے تھے ۔ لیکن بیشتر ڈرائیونگ اسکولس اس پر عمل نہیں کررہے ہیں بلکہ بیشتر اسکولس حکومت کے پاس رجسٹرڈ بھی نہیں ہیں ۔ سنٹرل موٹر وہیکل قواعد 1989 کے تحت ٹرینر کے لیے ضروری ہے کہ میکانیکل انجینئرنگ میں ڈپلومہ رکھے اس کے پاس ہیوی موٹر وہیکل لائسنس ہونا چاہئے ۔ بیشتر ڈرائیونگ اسکولس کے پاس رجسٹریشن لائسنس نہیں ہے۔ ایک لائسنس رکھنے والا اسکول غیر قانونی طور پر دو یا تین اسکولس چلارہا ہے ۔ ڈرائیونگ اسکولس میں ٹریننگ حاصل کرنے والوں کی تعداد پر کوئی روک نہیں ہے ۔ ہر ماہ سینکڑوں افراد کو ٹریننگ دی جارہی ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT