Tuesday , November 21 2017
Home / ہندوستان / غیر مسلم پناہ گزینوں کے مستقل قیام کے اجازت کی مخالفت

غیر مسلم پناہ گزینوں کے مستقل قیام کے اجازت کی مخالفت

آسام میں 12 گھنٹوں کا بند کامیاب، مرکزی حکومت کے فیصلے پر احتجاج
گوہاٹی 12 ستمبر (سیاست ڈاٹ کام) ملک میں غیر مسلم پناہ گزینوں کے مستقل قیام کی اجازت دینے کیلئے مرکزی حکومت کے فیصلے کے خلاف آج آسام جاتیہ وادی یووا چھاترا پریشد کی جانب سے 12 گھنٹوں کا آسام بند منایا گیا جس پر زبردست ردعمل ظاہر کرتے ہوئے تقریباً بند کو کامیاب کیا گیا۔ تجارتی ادارے، مارکٹس، تعلیمی اور تجارتی ادارے اور دفاتر بند رکھے گئے جبکہ ریاست بھر میں سڑکیں سنسان دکھائی دے رہی تھیں۔ یہ بند صبح 5 بجے تا 5 بجے شام منایا گیا اور آج سرکاری دفاتر اور بینکس کو دوسرے ہفتہ کی تعطیل کی وجہ سے یہ بند توقع سے کہیں کامیاب رہا۔ ریاست بھر میں تمام اہم سڑکیں ویران نظر آرہی تھیں اور تمام کمرشیل گاڑیاں بشمول بسیں، ٹمپوز، آٹوز اور ٹرکس کو چلانے سے گریز کیا گیا۔ تاہم سرکاری ٹرانسپورٹ کی گاڑیاں چند ایک مسافرین کے ساتھ چلائی گئیں۔ دارالحکومت گوہاٹی اور ریاست کے کئی ایک مقامات پر احتجاجیوں نے آج صبح سویرے سڑکوں پر ٹائیروں کو جلاکر پھینک دیا اور عوام سے کہاکہ بند کو کامیاب بنائیں۔

دریں اثناء ایک سینئر پولیس عہدیدار نے بتایا کہ ریاست کے مختلف مقامات سے سینکڑوں احتجاجیوں کو حراست میں لے لیا گیا۔ تاہم کہیں سے بھی ناخوشگوار واقعہ کی اطلاع نہیں ہے جبکہ ٹریفک میں رکاوٹ پیدا کرنے پر احتجاجیوں کو گرفتار کرلیا گیا۔ آسام جاتیہ وادی یووا چھاترا پریشد (AJYCP) نے مذہب کی بنیاد پر غیر مسلم پناہ گزینوں کو ہندوستان میں ویزا کے بغیر مستقل قیام کی اجازت دینے کے مرکزی حکومت کے فیصلے کے خلاف احتجاجی بند منانے کا اعلان کیا تھا۔ تاہم آج کے بند سے سیلاب سے متاثرہ امدادی سرگرمیوں اور دیگر ضروری خدمات کو مستثنیٰ قرار دیا گیا تھا۔ تنظیم ایک لیڈر نے کہاکہ ریاست آسام مزید پناہ گزینوں (میگرینٹس) کا بوجھ برداشت کرنے کی متحمل نہیں ہوسکتی۔ اس خصوص میں مرکز کا فیصلہ آسام تحریک، آسام میثاق اور ریاستی عوام کی توہین کے مترادف ہے۔ اس بند سے دیگر تنظیمیں آل بوڈو اسٹوڈنٹس یونین، آل آسام متوک یوبک چھاترا، سنملین، آل ڈیماسا اسٹوڈنٹس یونین، کربی اسٹوڈنٹس یونین، گوایہ موریہ دیسی جاتیہ پریشد، سونوال کچہری اسٹوڈنٹس یونین، آل آسام مستوک سمیلن، آل آسام مدھیسی اسٹوڈنٹس یونین، آل آسام منی پوری، اسٹوڈنٹس یونین، مورن اسٹوڈنٹس یونین اور آسام گن پریشد نے اظہار یگانگت کیا تھا۔

سبھاش چندرا بوس کے فائیلس کے افشاء کے فیصلہ کا خیرمقدم
کولکتہ 12 ستمبر (سیاست ڈاٹ کام) سینئر بی جے پی لیڈر ایم وینکیا نائیڈو نے آج نیتاجی سبھاش چندرا بوس کے فائیلس کو صیغہ راز سے باہر لانے کیلئے حکومت مغربی بنگال کے فیصلہ کا خیرمقدم کیا ہے اور اُمید ظاہر کی کہ نیتاجی کے لاپتہ ہوجانے کا معمہ بہت جلد حل ہوجائے گا۔ مرکزی وزیر پارلیمانی اُمور نے کہاکہ نیتاجی کی فائیلس کا افشاء ریاستی حکومت بہ آسانی کرسکتی ہے کیوں کہ ریاستوں کو بین الاقوامی تعلقات برقرار رکھنے کی پابندی نہیں رہتی۔

TOPPOPULARRECENT