Saturday , November 25 2017
Home / دنیا / فرانس میں لڑکوںسے زیادہ نوجوان لڑکیاں داعش سے وابستگی کی خواہاں

فرانس میں لڑکوںسے زیادہ نوجوان لڑکیاں داعش سے وابستگی کی خواہاں

پیرس 12 مارچ ( سیاست ڈاٹ کام ) فرانس میں لڑکوں سے زیادہ نوجوان خواتین عراق و شام میں جہاد کا دعوی کرنے والی داعش تنظیم میںشمولیت کی خواہاں ہیں۔ انسداد دہشت گردی دستہ کے ایک سینئر عہدیدار نے یہ بات بتائی ۔ فرانس کے ذرائع نے شناظت ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا کہ کم عمر افراد میں لڑکیاں زیادہ ہیں جو داعش میں شمولیت کی خواہش رکھتی ہیں۔ داعش سے وابستگی کی خواہش رکھنے والے کم عمر افراد میں لڑکیوں کا تناسب 55 فیصد پتہ چلا ہے ۔ سارے یوروپ کی نوجوان لڑکیوں کی طرح جو شام کو جانا چاہتی ہیں اور اکثر و بیشتر اپنے لا علم خاندانوں کو فرار ہوکر حیرت کا شکار کرتی ہیں فرانس سے تعلق رکھنے والی لڑکیاں صرف نام نہاد جہادی دلہن بننے کی خواہش نہیں رکھتیں۔ کسی نام نہاد جہادی سے شادی ان کیلئے تقریبا لازمی ہے تاہم فرانس کی لڑکیاں مردوں کی طرح تشدد اور لڑائی میں بھی دلچسپی رکھتی ہیں۔ کئی مرد و خواتین سے بات کرنے والے سوشیالوجسٹ فرہاد خسرو خاور نے یہ بات بتائی ۔ یہ تمام مرد و خواتین ریاڈیکل خیالاتکے حامل تھے ۔ انہوں نے کہا کہ ابتداء میں تشدد یا لڑائی صرف مردوں سے تعلق رکھتا تھا تاہم اب حالات بدل گئے ہیں اور لڑکیاں بھی اس کی خواہش کرنے لگی ہیں۔ ایک اور ادارہ کا کہنا ہے کہ لڑکیوں کا یہ ماننا ہے کہ مسلم آبادی کو نشانہ بنایا جا رہا ہے اور انہیں قتل کیا جا رہا ہے ۔ یہ لڑکیاں ایسی کوشش کا حصہ بننا چاہتی ہیں جس کا ادعا ہے کہ وہ مسلمانوں کیلئے سلامتی اور ایک مستقبل یقینی بنانا چاہتی ہیں۔

TOPPOPULARRECENT