Saturday , November 25 2017
Home / شہر کی خبریں / !فرزند کیلئے نمائندگی ‘ گستاخ رسول ؐ کے خلاف شکایت سے گریز

!فرزند کیلئے نمائندگی ‘ گستاخ رسول ؐ کے خلاف شکایت سے گریز

حیدرآباد 11 ستمبر(سیاست نیوز ): عوامی حلقوں میں اپنے سیاسی مفادات کی تکمیل کیلئے مذہب اور دین کا سہارا لینے والے سیاسی قائدین کیلئے جب عملی موقع آتا ہے تو حب رسول ؐ پر اولاد کی محبت آڑے آجاتی ہے جبکہ ایک حدیث مبارکہ کے مفہوم کے مطابق کوئی شخص اس وقت تک کامل مومن نہیں ہوسکتا جب تک اسے اپنے ماں ‘ باپ ‘ اولاد ‘ رشتہ داروں اور اہل و عیال کے علاوہ ساری دنیا کے مال و متاع سے زیادہ حضور اکرم ﷺ سے محبت نہ ہو۔ جمعہ کو ایک ایسی مثال سامنے آئی جہاں ایک رکن اسمبلی ایک مقدمہ میں اپنے فرزند کو راحت حاصل کرنے کی کوشش کے سلسلہ میں ڈی سی پی ساؤتھ زون کے آفس پہونچے تھے ۔ اتفاق کی بات یہ تھی کہ اسی وقت شہر کی کچھ مذہبی شخصیتوں اور تنظیموں کے ذمہ داران ‘ سابق RAW ڈائرکٹر آر این سنگھ کے خلاف شان رسالت ؐ میں گستاخی کے خلاف ڈی سی پی کے پاس شکایت درج کروانے جمع ہوئے تھے ۔ جب رکن اسمبلی وہاں پہونچے تو ان تنظیموں کے نمائندوں اور ذمہ داران نے ان کی آمد پر مسرت کا اظہار کیا اور ان سے خواہش کی کہ ان کی قیادت میں ڈی سی پی سے شکایت درج کروائی جائیگی ۔ تاہم وہاں موجود افراد کو اس وقت حیرت ہوئی جب رکن اسمبلی شان رسالت ؐ میں گستاخی کے مسئلہ پر شکایت درج کروانے سے گریز کیا اور دوسری مصروفیت کا بہانہ پیش کردیا ۔ ان کی جلد بازی اور حرارت ایمانی کے مسئلہ پر عملا لا تعلقی سے یہ قیاس تقویت پانے لگا ہے کہ وہ اپنے فرزند کے خلاف درج کئے گئے مقدمہ میں پولیس کی مدد لینے یا پولیس پر اثر انداز ہونے کیلئے وہاں پہونچے تھے اور انہوں نے گستاخ رسول ؐ کے خلاف شکایت کے اندراج میں حصہ دار بننے سے گریز کیا ۔ اب یہ ہدایت تھی یا مصلحت یہ تو رکن اسمبلی ہی بتاسکتے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT