Friday , June 22 2018
Home / ہندوستان / فرضی انکاؤنٹر کیس میں ایک فوجی کو سزائے عمر قید

فرضی انکاؤنٹر کیس میں ایک فوجی کو سزائے عمر قید

سرینگر ۔ 13 ۔ مارچ : ( سیاست ڈاٹ کام ) : فوجی عدالت نے آج مچھیل فرضی انکاونٹر کیس میں ایک اور سپاہی کو سزاء عمر قید سناتے ہوئے خدمات سے برطرف کردیا ہے جب کہ اپریل 2010 میں لائن آف کنٹرول کے قریب پیش آئے اس واقعہ میں 3 نوجوان ہلاک ہوگئے تھے ۔ ایک اعلیٰ فوجی عہدیدار نے نام مخفی رکھنے کی شرط پر بتایا کہ جنرل کوٹ مارشل نے ٹیریٹوریل آرمی ریفل مین

سرینگر ۔ 13 ۔ مارچ : ( سیاست ڈاٹ کام ) : فوجی عدالت نے آج مچھیل فرضی انکاونٹر کیس میں ایک اور سپاہی کو سزاء عمر قید سناتے ہوئے خدمات سے برطرف کردیا ہے جب کہ اپریل 2010 میں لائن آف کنٹرول کے قریب پیش آئے اس واقعہ میں 3 نوجوان ہلاک ہوگئے تھے ۔ ایک اعلیٰ فوجی عہدیدار نے نام مخفی رکھنے کی شرط پر بتایا کہ جنرل کوٹ مارشل نے ٹیریٹوریل آرمی ریفل مین عباس حسین شاہ کو سزائے عمر قید کے ساتھ سرویس سے برطرف کردیا گیا ہے ۔ گذشتہ سال نومبر میں 5 فوجیوں بشمول 2 عہدیداروں کو 3 نوجوانوں کو موت کے گھاٹ اتار دینے پر عمر قید کی سزا دی گئی تھی ۔ جنہوں نے ضلع کپواڑہ کے مچھیل سیکٹر میں ان ہلاکتوں کو انکاونٹر کا رنگ دیتے ہوئے مہلوکین کو پاکستانی درانداز قرار دیا تھا ۔ اپریل 2010 کو پیش آئے اس واقعہ کے خلاف وادی کشمیر میں زبردست احتجاج کیا تھا ۔ قبل ازیں شاہ کو منسوبہ الزامات سے بری کردیا گیا تھا لیکن اب آرمی ہیڈکوارٹر کی ہدایت پر تازہ کورٹ مارشل میں سزائے عمر قید دی گئی ہے ۔ شاہ کے علاوہ مچھیل فرضی انکاونٹر کیس میں کرنل دنیش پٹھانیہ ، کیپٹن اویندر سنگھ ، حوالدار دیویندر ، لانس نائیک لکشمی اور ارون کمار ملزم ہیں ۔

TOPPOPULARRECENT