Friday , September 21 2018
Home / شہر کی خبریں / فرضی انکاؤنٹر کی ایس آئی ٹی تحقیقات کا اعلان مسترد

فرضی انکاؤنٹر کی ایس آئی ٹی تحقیقات کا اعلان مسترد

سی بی آئی یا کم از کم عدالتی تحقیقات ضروری : وحدت اسلامی کے احتجاجی جلسہ میں مطالبہ

سی بی آئی یا کم از کم عدالتی تحقیقات ضروری : وحدت اسلامی کے احتجاجی جلسہ میں مطالبہ

حیدرآباد ۔ /12 اپریل (سیاست نیوز) مسلم تنظیموں کے ذمہ داران نے چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ کی جانب سے نلگنڈہ میں فرضی انکاؤنٹر معاملے کی ایس آئی ٹی تحقیقات کے اعلان کو مسترد کردیا ۔ وحدت اسلامی کی جانب سے عیدگاہ اجالے شاہ میں منعقدہ جلسہ عام کے دوران مسلم تنظیموں کے ذمہ داران و جلسہ میں موجود سامعین نے ایس آئی ٹی کی تشکیل کے اعلان کو مسترد کرکے سب سے پہلے ان نوجوانوں کے سفاکانہ قتل میں ملوث عہدیداروں کو معطل کرن اور تحقیقات کا آغاز کرنے کا مطالبہ کیا ۔ مولانا نصیرالدین ، مولانا عبدالعلیم اصلاحی ، جناب مشتاق ملک ، جناب محمد اظہر الدین ، جناب مجاہد ہاشمی کے علاوہ جناب سیف اللہ خالد ایڈوکیٹ نے سعیدآباد عیدگاہ اجالے شاہ میں منعقدہ جلسہ سے خطاب کیا ۔ مولانا نصیرالدین نے کہا کہ ملت اسلامیہ میں اجتماعیت کا فروغ بے انتہا ضروری ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ مسلم نوجوانوں کو بیدار کرکے ان میں پھیل رہی برائیوں کو دور کرنے اور انہیں اللہ کے راستے پر چلنے کی ترغیب دینے کی ضرورت ہے ۔ مولانا نصیرالدین نے بتایا کہ یہ حالات نئے نہیں ہے بلکہ ہر دور میں نوجوانوں کو نشانہ بنا کر پولیس نے حوصلے پست کرنے کی کوشش کی ہے ۔ انہوں نے پولیس انکاؤنٹر میں مارے گئے نوجوانوں کو شہید قرار دیتے ہوئے کہا کہ سابق میں سردار ، فصیح الدین ، رفیع الدین ، محمود علی ، اعظم ، عزیز ، اعظم غوری اور مجاہد سلیم اصلاحی کی پولیس فائرنگ میں اموات اس بات کی دلیل ہے کہ پولیس نے ہر دور میں نوجوانوں کو نشانہ بنایا ہے ۔ انہوں نے کوشش کرکے اللہ سے مدد و نصرت مانگنے کی تلقین کی ۔ مولانا عبدالعلیم اصلاحی نے کہا کہ مہلوکین کے ورثاء کو 20 لاکھ روپئے بطور معاوضہ حکومت ادا کرے اور پولیس اسکارٹ میں شامل تمام 17 ملازمین کو معطل کرکے تحقیقات کا آغاز کرے ۔ انہوں نے کہا کہ تحقیقات کیلئے وقت کا تعین کیا جانا چاہئیے ۔ مولانا اصلاحی نے افسوس کا اظہار کیا کہ ایف آئی آر کو عصری جہاد قرار دیا جارہا ہے ۔ جبکہ ایف آئی آر کے نتائج کیا نکلتے ہیں اس کا اندازہ مجاہد سلیم اصلاحی کی ایف آئی آر سے لگایا جاسکتا ہے ۔ جسے درج ہوئے 11 سال گزر چکے ہیں ۔ انہوں نے منظم انداز میں زنجیری دھرنا اور بھوک ہڑتال کے ذریعہ انصاف کیلئے جدوجہد کی ضرورت پر زور دیا ۔ جناب مشتاق ملک نے کہا کہ چندر شیکھر راؤ نے ایس آئی ٹی کی تشکیل کے ذریعہ تحقیقات کا اعلان کرکے اپنی ذہنیت واضح کردی ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ ایوانوں میں موجود منتخبہ مسلم نمائندوں کی خاموشی افسوسناک ہے ۔ انہوں نے ایس آئی ٹی تحقیقات کے اعلان کو کھوکھلا قرار دیا اور برسرخدمت ہائیکورٹ جج یا سی بی آئی تحقیقات کا مطالبہ کیا ۔ جناب مجاہد ہاشمی نے مسجدوں اور مسلم تنظیموں کے شہر میں مسلم نوجوانوں پر ہونے والے مظالم پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ سرکاری دہشت گردی کے ذریعہ شہر کی پرامن فضاء کو نشانہ بنایا جارہا ہے ۔ جناب سیف اللہ خالد ایڈوکیٹ نے 5 نوجوانوں کے قتل کو فراموش نہ کرنے کا مشورہ دیتے ہوئے کہا کہ آج نوجوان محفوظ نہیں ہے کل قائدین محفوظ نہیں رہیں گے ۔ ناانصافیوں کے سبب صورتحال میں بگاڑ آسکتا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT