Tuesday , December 18 2018

فرقہ وارانہ تشدد بل پر لوک سبھا میں مباحث

نئی دہلی۔ 11 اگست (سیاست ڈاٹ کام) لوک سبھا میں آج فرقہ وارانہ تشدد بل پر مباحث مقرر ہیں۔ وقفہ سوالات کے بعد ایوان کی کارروائی کی فہرست میں فرقہ وارانہ تشدد بل اور خواتین اور بچوں پر مظالم کے بل پر مباحث بھی شامل ہیں۔ مباحث کا آغاز کانگریس ارکان پارلیمنٹ، شاہنواز اور محمد اسرار کریں گے۔ تمام کا مرکز توجہ نائب صدر کانگریس راہول گاندھی

نئی دہلی۔ 11 اگست (سیاست ڈاٹ کام) لوک سبھا میں آج فرقہ وارانہ تشدد بل پر مباحث مقرر ہیں۔ وقفہ سوالات کے بعد ایوان کی کارروائی کی فہرست میں فرقہ وارانہ تشدد بل اور خواتین اور بچوں پر مظالم کے بل پر مباحث بھی شامل ہیں۔ مباحث کا آغاز کانگریس ارکان پارلیمنٹ، شاہنواز اور محمد اسرار کریں گے۔ تمام کا مرکز توجہ نائب صدر کانگریس راہول گاندھی ہیں جنہوں نے گزشتہ چہارشنبہ ملک گیر سطح پر خاص طور پر یوپی میں فرقہ وارانہ تشدد کے واقعات کی بڑھتی ہوئی تعداد پر مباحث کا مطالبہ کرتے ہوئے ایوان کے وسط میں پہنچ کر ہنگامہ کھڑا کردیا تھا۔ راہول گاندھی نے الزام عائد کیا ہے کہ اپوزیشن کو پارلیمنٹ میں اظہار خیال کی اجازت ہی نہیں دی جارہی ہے۔ انہوں نے صدرنشین پر بھی یکطرفہ اور جانبدارانہ کارروائی کا الزام عائد کیا تھا۔ انہوں نے کہا تھا کہ پارلیمنٹ میں ایک ہی شخص کا ملک کے ہر مسئلہ پر بول بالا ہے، یعنی ان کا مطلب اسپیکر سے ہے جو یکطرفہ اور جانبدارانہ کارروائی کررہی ہیں۔ اسی وجہ سے ہم نعرہ بازی کرنی پڑ رہی ہے۔ برسراقتدار بی جے پی پر تنقید کرتے ہوئے راہول گاندھی نے ایک روزنامہ سے کہا کہ فرقہ وارانہ تشدد اپنے ملک میں دانستہ طور پر کروایا جارہا ہے۔

TOPPOPULARRECENT