Wednesday , September 19 2018
Home / شہر کی خبریں / فرقہ پرستی کے پھیلانے میں بی جے پی اور مجلس ایک ہی سکے کے دورخ

فرقہ پرستی کے پھیلانے میں بی جے پی اور مجلس ایک ہی سکے کے دورخ

اشتعال انگیزی ناقابل برداشت ، انچارج کانگریس امور اے پی ڈگ وجئے سنگھ

اشتعال انگیزی ناقابل برداشت ، انچارج کانگریس امور اے پی ڈگ وجئے سنگھ
حیدرآباد ۔ 15 ۔ ستمبر : ( سیاست نیوز ) : آل انڈیا کانگریس کے جنرل سکریٹری و انچارج آندھرا پردیش کانگریس امور مسٹر ڈگ وجئے سنگھ نے فرقہ پرستی پھیلانے کے معاملے میں بی جے پی اور مجلس ایک ہی سکے کے دو رخ ہونے کا الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ کانگریس پارٹی فرقہ پرستی اور اشتعال انگیزی کو ہرگز برداشت نہیں کرے گی ۔ تلنگانہ کانگریس کے توسیعی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے مسٹر ڈگ وجئے سنگھ نے کہا کہ سیکولرازم کا دوسرا نام کانگریس پارٹی ہے ۔ کانگریس پارٹی نے اقتدار کی کبھی پرواہ نہیں کی ہے اور نہ ہی فرقہ پرستی کو برداشت کیا ہے ۔ ملک کی ترقی عوامی بہبود اور قومی یکجہتی کو فروغ دینے کے لیے کام کیا ہے ۔ تاہم بی جے پی اقتدار کے لیے سارے ملک میں نفرت پھیلا رہی ہے ۔ حیدرآباد میں مجلس بھی بی جے پی کی تقلید کرتے ہوئے ہندو مسلم اتحاد کو داؤ پر لگا دیا ہے ۔ صرف اور صرف سیاسی مفادات کے لیے فرقہ پرستی کو بڑھاوا دیا جارہا ہے ۔ کانگریس پارٹی فرقہ پرستوں سے کبھی کوئی سمجھوتہ نہیں کرے گی ۔ کانگریس کی صدر مسز سونیا گاندھی فرقہ پرستوں کے سامنے آہنی دیوار بنی ہوئی ہیں اور کانگریس پارٹی سیکولرازم کو مستحکم کرنے کی کوشش کررہی ہے ۔ وہ اس پلیٹ فارم سے بی جے پی اور مجلس دونوں کو انتباہ دیتے ہیں کہ وہ اپنی حرکتوں سے باز آجائیں ورنہ دنوں جماعتوں کی فرقہ پرستی کے زہر کو کانگریس سیکولرازم کی مٹھاس سے مقابلہ کرتے ہوئے شکست دے گی ۔ مسٹر ڈگ وجئے سنگھ نے کانگریس کے قائدین اور کارکنوں کو مشورہ دیا کہ وہ حالیہ شکست سے مایوس نہ ہوں کانگریس پارٹی پھر ایک بار بڑی طاقت بن کر ابھرے گی ۔ کانگریس قائدین اپنی صفحوں میں اتحاد پیدا کریں ۔ نظریاتی اختلافات کو فراموش کرتے ہوئے اتحاد کا مظاہرہ کریں اور پارٹی کیڈر میں جوش و خروش بھرتے ہوئے بی جے پی کی زیر قیادت این ڈی اے حکومت اور ٹی آر ایس حکومت کے 100 دن کی حکمرانی میں ان کی کارکردگی کا جائزہ لیں ۔ بی جے پی اور ٹی آر ایس نے اپنے اپنے انتخابی منشور کے ذریعہ عوام سے کیا وعدے کیے ہیں ؟ اور کتنے وعدوں پر عمل آوری کی ہے ؟ اس پر غور کریں ۔ حکومت کی عوام دشمن پالیسیوں کے خلاف عوام کے ساتھ مل کر احتجاج کرتے ہوئے حکومتوں پر دباؤ بنائیں اور ساتھ ہی عنقریب گریٹر حیدرآباد میونسپل کارپوریشن کے انتخابات منعقد ہونے والے ہیں ۔ ان انتخابات کے لیے کانگریس پارٹی قائدین ابھی سے تیاری کریں ۔ شہری مسائل ، عوامی مسائل ، عوام کی تکالیف ، بنیادی سہولتوں کے فقدان پر عوامی احتجاج شروع کریں اور آنے والے انتخابات میں کانگریس پارٹی کو بھاری اکثریت سے کامیاب بنانے کے لیے ابھی سے کمربستہ ہوجائیں۔ پارٹی کے لیے خدمات انجام دینے والے کانگریس کے عوامی قائدین کی نشاندہی کرتے ہوئے ان کی پوری طرح سے حوصلہ افزائی کریں ۔۔

TOPPOPULARRECENT