Friday , November 24 2017
Home / Top Stories / فرقہ پرست اشوک پرمار کے رویہ میں تبدیلی

فرقہ پرست اشوک پرمار کے رویہ میں تبدیلی

گجرات میں ہندو ۔ مسلم اتحاد کیلئے کام کرنے کا عزم
احمدآباد ۔ 11 اگست (سیاست ڈاٹ کام) اشوک بھاؤبھائی پرمار جوکہ گجرات کے فسادات میں مسلم دشمن چہرہ بن کر ابھرے تھے، اب ہندو ۔ مسلم اتحاد کیلئے کام کریں گے۔ گجرات فسادات میں پرمار کو رسوائی اٹھانی پڑی تھی جب قتل و غارتگیری کا بازار گرم کرتے ہوئے ان کی تصاویر اخبارات اور میگزین میں شائع ہوئی تھی۔ ان تصاویر میں دیکھا گیا کہ پرمار کے چہرہ سے نفرت کی آگ برس رہی ہے اور ایک ہاتھ پر زعفرانی پٹی (بینڈ) باندھے ہوئے ہیں اور دوسرے ہاتھ میں آہنی سلاخ پکڑے ہوئے ہیں۔ پرمار پیشہ کے اعتبار سے ایک موچی ہیں۔ ساورکنڈلہ سے شروع کی گئی دلت اسمیتایرا میں شامل ہوگئے ہیں بتایا کہ ہندو مسلم اتحاد کیلئے کام کریں گے۔ سال 2005ء میں ان کے خلاف فساد اور آتشزنی کا کیس درج کیا گیا ہے لیکن ناکافی ثبوت کی بناء مقامی عدالت نے الزامات بری کردیا تھا۔ تاہم حکومت گجرات نے سیشن کورٹ کے فیصلہ کے خلاف سپریم کورٹ میں اپیل دائر کی ہے جہاںپر یہ کیس معرض التواء ہے۔ سال 2014ء میں پرمار نے معصوم لوگوں کے قتل پر معذرت خواہی کی تھی۔ بتایا کہ گجرات میں عریبوں کیلئے کوئی تبدیلی نہیں آئی ہے۔

TOPPOPULARRECENT