فساد میں بیٹے کی ہلاکت کے باوجود امام کی امن کی اپیل

کولکاتہ 30مارچ (سیاست ڈاٹ کام) مغربی بنگال کے آسنسول میں واقع نورانی مسجد کے امام نے اپنے بیٹے کی ہلاکت کے باوجود عوام سے امن کی اپیل کی ہے ۔ انہوں نے مشتعل بھیڑ سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اگر میرے بیٹے کی ہلاکت کا انتقام یا فساد برپاکرنے کی کوشش کی گئی تو میں امامت چھوڑ کر شہر سے باہرچلا جاؤں گا ۔خیال رہے کہ گزشتہ دنوں امام کے سولہ سالہ بیٹے کو شرپسندوں نے اغواکے بعد ہلاک کردیا تھا۔ امام کے بیٹے صبغۃ اللہ راشدی نے چند دنوں قبل دسویں بورڈ کا امتحان دیا تھا۔وہ منگل کے دن سے لاپتہ ہوگیا تھا ۔بعد میں معلوم ہوا کہ فسادیوں کی بھیڑ نے اسے اغواکیا تھا۔بدھ کی رات اس کی لاش برآمد ہوئی۔ جمعرات کو لاش کی شناخت ہوئی کہ یہ مسجد کے امام مولانا امداداللہ کے بیٹے صبغۃ اللہ کی لاش ہے ۔ اس کے بعد سے ہی آسنسول کے مسلم محلوں میں کشیدگی تھی۔یہ ناراضگی بڑے فساد میں تبدیل ہوسکتی تھی ۔لیکن موقع کی نزاکت کو دیکھتے ہوئے امام صاحب نے بروقت مداخلت کی۔

TOPPOPULARRECENT