Monday , November 20 2017
Home / ہندوستان / فضائی آلودگی سنگین مسئلہ ‘ فوری حل ضروری ‘ سپریم کورٹ

فضائی آلودگی سنگین مسئلہ ‘ فوری حل ضروری ‘ سپریم کورٹ

نئی دہلی 17 جنوری ( سیاست ڈاٹ کام ) سپریم کورٹ نے خبردار کیا ہے کہ فضائی آلودگی کا مسئلہ بہت سنگین ہے اور اس کا حل فوری دریافت کرنے کی ضرورت ہے ۔ اس کیلئے کئی برس نہیں لگائے جانے چاہئیں۔ جسٹس ایم بی لوکر اور جسٹس پی سی پنت پر مشتمل ایک بنچ نے کہا کہ یہ آلودگی کا مسئلہ بہت سنگین ہے ۔ اگر آپ اس کے حل کیلئے کئی برسوں کی بات کرتے ہیں تو یہ ایک مسئلہ ہے ۔ عدالت نے کہا کہ کچھ لوگ فضائی آلودگی سے صرف اسی لئے متاثر ہو رہے ہیں کیونکہ اس سے نمٹنے کا موثر نظام موجود نہیں ہے اور کئی قواعد پر عمل آوری نہیں کی جاتی ۔ عدالت نے یہ رائے اس وقت ظاہر کی جب سینئر وکیل ہریش سالوے نے کہا کہ آلودگی پر قابو پانے کے سرٹیفیکٹ کے حصول کو یقینی بنایا جائے اور انہیں ہر سال گاڑیوں کے انشورنس سے مربوط کیا جائے ۔ بنچ نے کہا کہ ایک سال کا وقفہ بہت دور ہوتا ہے ۔ گاڑیوں کا انشورنس ہر سال کیا جاتا ہے ہمیں اس مئسلہ کا حل بہت تیزی سے دریافت کرنے کی ضرورت ہے ۔ عدالت نے سالیسیٹر جنرل رنجیت کمار سے کہا کہ وہ دہلی میں پی یو سی مراکز کی تعداد کے تعلق سے وضاحت کریں۔ رنجیت کمار نے عدالت کو بتایا کہ دہلی میں اس طرح کے 962 مراکز موجود ہیں۔

TOPPOPULARRECENT