Thursday , December 14 2017
Home / کھیل کی خبریں / فلاویا پینیٹا نے پہلا گرانڈ سلام ٹائٹل جیت لیا

فلاویا پینیٹا نے پہلا گرانڈ سلام ٹائٹل جیت لیا

Roberta Vinci, of Italy, left, and Flavia Pennetta, of Italy, pose for photos after Pennetta beat Vinci in the women's championship match of the U.S. Open tennis tournament, Saturday, Sept. 12, 2015, in New York. (AP Photo/Julio Cortez)

یو ایس او پن ویمنس فائنل میں اٹلی کی کھلاڑی نے ہم وطن روبرٹاوِنسی کو ہرادیا، کامیابی کے فوری بعد سبکدوشی کا اعلان
نیویارک۔ 13 ستمبر (سیاست ڈاٹ کام) فلاویا پینیٹا نے آج پہلا گرانڈ سلام سنگلز ٹائٹل جیت لیا۔ انہوں نے روبرٹاونسی کو یو ایس او پن ویمنس کے فائنل میں 7-6 (7/4) ، 6-2 سے ہرادیا اور اس کے ساتھ ہی ٹینس کی دنیا سے سبکدوشی کا بھی اعلان کیا ہے۔ پینیٹا نے 33 سال کی عمر میں گرانڈ سلام جیتا اور وہ پہلی مرتبہ گرانڈ سلام ویمنس چمپین بننے والی بڑی عمر کی کھلاڑی بن چکی ہیں۔ انہوں نے 93 منٹس میں کامیابی کو اپنے حق میں کرلیا اور یہ ایک خواب تھا جو پورا ہوا۔ پینیٹا نے ٹرافی حاصل کرنے کے چند لمحوں میں یہ اعلان کیا کہ انہوں نے اس قطعی کامیابی کے بعد سبکدوشی کا فیصلہ کیا ہے۔ وہ اسی انداز میں ٹینس کی دنیا کو خیرباد کہنا چاہتی تھیں اور اب وہ بے حد خوش ہیں۔ پینیٹا اٹلی کی سنگلز ٹائٹل جیتنے والی دوسری خاتون کھلاڑی ہے جبکہ اس سے پہلے فرانسسکا شایاوون نے 2010ء فرنچ اوپن جیتا تھا اور وہ بھی اس وقت 29 سال کی تھیں اور انہیں بڑی عمر کی خاتون ٹائٹل جیتنے والی کھلاڑی کا اعزاز حاصل ہوا تھا۔ اٹلی کی ٹینس اسٹار فلاویا پینیٹا خواتین کے سنگلس مقابلوں میں اپنی ہم وطن روبرٹا ونسی کو ہرا کر رواں سال کے آخری گرینڈ سلام یو ایس اوپن کی فاتج بن گئی ہیں۔

یہ ان کا پہلا گرینڈ سلام خطاب ہے۔خیال رہے کہ انھوں نے یہ ٹائٹل 33 سال اور چھ ماہ کی عمر میں حاصل کیا ہے۔ فلاویا نے گرینڈ سلام کی تاریخ میں سب سے زیادہ عمر میں پہلی بار فاتح بننے کا اعزاز حاصل کرنے کے بعد ہی اپنے پیشہ ورانہ ٹینس کو خیرباد کہہ دیا۔فلاویا نے کہا کہ ایک ماہ پہلے جب یہ ٹورنمنٹ شروع ہونے والا تھا اس سے پہلے ہی میں نے فیصلہ کر لیا تھا کہ اس طرح سے میں ٹینس کو الوداع کہوں گی، یہ میرا آخری ٹورنمنٹ تھا اور میں اس سے بہتر طریقے سے سبکدوشی کے بارے میں نہیں سوچ سکتی تھی۔‘فلاویا اور روبرٹا بچپن کی سہیلیاں ہیں اور اس مرتبہ امریکی اوپن میں دونوں نے زبردست مظاہرہ کرتے ہوئے پہلی بار فائنل میں قدم رکھا تھا۔ پہلی بار گرینڈ سلام مقابلے کے فائنل تک پہنچنے والی فلاویا نے جیتنے کے بعد کہا کہ میں نے کبھی نہیں سوچا تھا کہ میں چمپین بنوں گی۔ یہ میرے پسندیدہ ٹورنمنٹ میں سے ایک ہے، میں یہاں کھیلنا پسند کرتی ہوں۔ میری ٹیم نے جو میرے لیے کیا اس کے لیے میں ان کی شکر گذار ہوں ۔ انہوں نے اپنی سہیلی کے ساتھ کھیلنا بھی بہترین تھا۔ ہم ایک دوسرے کو اس وقت سے جانتے ہیں جب ہم بہت چھوٹے تھے، ہم نے اتنا وقت ساتھ گزارا ہے کہ ہم اپنی زندگی پر ایک کتاب لکھ سکتے ہیں۔‘ دوسری جانب فائنل میں شکست سے دوچار ہونے والی روبرٹا ونسی نے کہا کہ یہ مرحلہ مشکل تھا۔ پچھلے 24 گھنٹے سے میرے دماغ میں بہت سی چیزیں تھیں۔ لیکن میں فلاویا کے بارے میں واقعی بہت خوش ہوں۔جس کھلاڑی کو آپ ایک عرصے سے جانتے ہوں اس کے خلاف کھیلنا مشکل ہوتا ہے۔ میں نے اپنا بہترین کھیل پیش کرنے کی کوشش کی لیکن فلاویا نے ناقابل یقین طور پر بہتر کھیل پیش کیا اور میں اس کے لئے انہیں مبارکباد دیتی ہوں۔‘ اس ٹورنمنٹ میں فلاویا کو 26 واں رینک حاصل تھا لیکن روبرٹا ونسی کو کوئی رینک حاصل نہیں تھا۔ ویسے ونسی کو عالمی درجہ بندی میں 43 واں رینک حاصل ہے لیکن انھوں نے سیمی فائنل میں خواتین کی ورلڈ نمبر ایک سیرینا ولیمس کو شکست دے کر سب کو چونکا دیا تھا۔

TOPPOPULARRECENT