Thursday , December 14 2017
Home / عرب دنیا / فلسطینی حریفوں کے قاہرہ میں مفاہمتی مذاکرات

فلسطینی حریفوں کے قاہرہ میں مفاہمتی مذاکرات

قاہرہ۔ 10 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) فلسطینی حریف گروپس فتح اور حماس نے بند کمرہ میں قاہرہ کے مقام پر تفصیلی مذاکرات کا آغاز کردیا تاکہ برسوں سے دونوں گروپس کی رقابت کا خاتمہ کیا جاسکے۔ ایک وفد کے بموجب اس بات چیت کے بعد گذشتہ ہفتہ فلسطینی اتھاریٹی کے وزیراعظم رامی حمداللہ نے حماس زیراقتدار غزہ پٹی کا 2015ء کے بعد پہلی بار دورہ کیا اور ان کے وزراء نے سرکاری طور پر حکومتی محکموں کا انتظام سنبھال لیا۔ مفاہمتی بات چیت کمیٹی نے مصری سرپرستی میں اپنا کام شروع کردیا ہے۔ مذاکرات کا آغاز مصری محکمہ سراغ رسانی کے ہیڈکوارٹرس پر ہوا تاکہ ان فائلس کا جائزہ لیا جاسکے جن سے فلسطینی قومی یکجہتی حکومت غزہ پٹی میں کام کرسکے گی۔ عظام الاحمد صدر الفتح وفد میں قبل ازیں ذرائع ابلاغ سے کہا کہ بات چیت کا اہم ترین موضوع غزہ حکومت کو بااختیار بنانا ہوگا۔ حماس کے اسلام پسند اور مغربی کنارہ کی الفتح تحریک جو صدر فلسطین محمود عباس کی زیرقیادت کام کرتی ہے۔ 2007ء میں تقریباً خانہ جنگی کے بعد ایک دوسرے کے حریف بن گئے تھے۔ اس رقابت کی وجہ سے امن مذاکرات کے جو اسرائیل کے ساتھ ہونے والے ہیں، امکانات پیچیدگی کا شکار ہوگئے تھے۔ کئی سابق کوششیں مفاہمت کیلئے ناکام ہوچکی ہیں لیکن مصر زیرقیادت حالیہ دباؤ کو بڑی توانائی گذشتہ ماہ حاصل ہوئی جبکہ حماس نے غزہ میں منتخبہ اقتدار منتقل کرنے سے اتفاق کرلیا۔ دونوں فریقین ایک دوسرے کے سخت خلاف تھے۔ تاہم آئندہ حماس جو 25 ہزار مسلح افراد کا شعبہ رکھتا ہے جو اسلام پسند ہیں اور بات چیت سے اختلاف کرتے ہیں ، الفتح سے مفاہمت کرنے پر آمادہ ہوگیا۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT