Monday , September 24 2018
Home / Top Stories / فلسطینی حکومت کو امریکی تائید پر اسرائیل برہم

فلسطینی حکومت کو امریکی تائید پر اسرائیل برہم

یروشلم ۔ 3 جون (سیاست ڈاٹ کام) کئی اسرائیلی وزراء نے آج واشنگٹن پر شدید تنقید کی کہ اس نے نئی فلسطینی اتحادی حکومت کے ساتھ کام کرنے کا فیصلہ کیا ہے، جسے اسلام پسند تحریک حماس کی حمایت حاصل ہے۔ سیکوریٹی کابینی رکن وزیرمواصلات گیلاد اردان نے جو وزیراعظم بنیامن نتن یاہو کے قریب سمجھے جاتے ہیں، کہا کہ بدقسمتی سے امریکی بزدلی نے تمام ریک

یروشلم ۔ 3 جون (سیاست ڈاٹ کام) کئی اسرائیلی وزراء نے آج واشنگٹن پر شدید تنقید کی کہ اس نے نئی فلسطینی اتحادی حکومت کے ساتھ کام کرنے کا فیصلہ کیا ہے، جسے اسلام پسند تحریک حماس کی حمایت حاصل ہے۔ سیکوریٹی کابینی رکن وزیرمواصلات گیلاد اردان نے جو وزیراعظم بنیامن نتن یاہو کے قریب سمجھے جاتے ہیں، کہا کہ بدقسمتی سے امریکی بزدلی نے تمام ریکارڈ توڑ دیئے ہیں۔ حماس جو خواتین و بچوں کو ہلاک کرتی ہے، اس کے ساتھ کوئی بھی اشتراک ناقابل قبول ہے۔ اسرائیل نے کل اعتراف کیا تھا کہ وہ واشنگٹن کے اس فیصلہ کے بعد نہایت مایوس ہیکہ امریکہ نے نئی فلسطینی حکومت کی بھرپور تائید کرتے ہوئے کہا ہیکہ وہ نئے نظم و نسق کے بارے میں فیصلہ

اس کے اقدامات پر کرے گا۔ اردان نے کل اپنے ریمارکس میں کہا کہ امریکہ کی طرف سے موقف میں اس طرح کا پلٹاؤ صرف امن مذاکرات کے احیاء کے امکانات کو نقصان ہی پہنچا سکتا ہے۔ امریکہ زیرقیادت بات چیت اواخر اپریل میں ناکام ہوگئی تھی جبکہ فلسطین نے مغربی کنارہ اور حماس زیرانتظام غزہ پٹی کے قائدین کے درمیان اتحاد کی معاملت کا یکایک اعلان کردیا تھا جس پر اسرائیل نے کہا کہ وہ اسلام پسندوں کی تائید والی کوئی بھی حکومت کے ساتھ مذاکرات نہیں کرے گا۔ معاہدہ کی شرائط کے تحت حماس اور فتح جس کا مغربی کنارہ کے نظم و نسق پر غلبہ ہے، مل جل کر کام کرتے ہوئے آزاد ارکان کی عبوری حکومت وضع کی جو آئندہ 6 ماہ کے اندرون انتخابات کی تیاری کرے گی۔ فلسطینی حکومت کی کل صدر محمود عباس کی موجودگی میں حلف برداری ہوئی جبکہ واشنگٹن میں چند گھنٹے بعد بھی اپنی تائید کی برسرعام پیشکش کردی۔

TOPPOPULARRECENT