Monday , December 18 2017
Home / Top Stories / فلسطینی عوام کیلئے ہندوستان کی تائید برقرار رہے گی

فلسطینی عوام کیلئے ہندوستان کی تائید برقرار رہے گی

موقف میں کوئی تبدیلی نہیں آئی ۔ عرب لیگ سکریٹری جنرل سے سشما سوراج کی وضاحت
قاہرہ 24 اگسٹ ( سیاست ڈاٹ کام ) ہندوستان نے آج عرب لیگ سے واضح کردیا کہ فلسطینی کاز سے متعلق اس کی پالیسی میں کوئی تبدیلی نہیں آئی ہے اور مستقبل میں بھی فلسطینی عوام کی تائید کا سلسلہ جاری رہے گا ۔ وزیر خارجہ سشما سوراج نے سکریٹری جنرل عرب لیگ نبیل العربی سے ملاقات میں یہ پیام دیا اور کہا کہ ہندوستان فلسطینی کاز کا ہنوز حامی ہے ۔ سشما سوراج کے ساتھ دورہ پر آئے ہوئے وزارت خارجہ کے سکریٹری ( ایسٹ ) انیل وادھوا نے بتایا کہ ہم نے یہ واضح کردیا کہ فلسطینی کاز کیلئے ہماری تائید جاری رہے گی ۔ ہم نے یہ واضح کردیا ہے کہ فلسطینی کاز کے تعلق سے ہندوستان کے موقف میں کوئی تبدیلی نہیں آئی ہے ۔ صدر جمہوریہ ہند فلسطین ‘ اسرائے اور مصر کا دورہ کرنے والے ہیں اور فلسطینی کاز کیلئے ہماری تائید میں مستقبل میں بھی کوئی کمی نہیں آئیگی ۔ سشما سوراج اپنے دو قومی دورہ پر مصر پہونچی ہیں اور یہاں سے وہ جرمنی جائیں گی ۔ جاریہ سال 3 جولائی کو ہندوستان پہلی مرتبہ اقوام متحدہ حقوق انسانی کونسل میں اسرائیل کی مخالف قرار داد پر رائے دہی سے غیر حاضر رہا تھا ۔ اس قرار داد میں گذشتہ سال غزہ میں ہوئی لڑائی کے ذمہ داروں سے جواب طلبی پر زور دیا گیا تھا ۔ قرار داد میں کہا گیا تھا کہ جن فریقین نے جنگ کے دوران بین الاقوامی قوانین کی خلاف ورزی کی تھی ان پر ذمہ داری عائد کرتے ہوئے انصاف کیا جانا چاہئے ۔ اس قرار داد کی تائید میں جملہ 41 ووٹ ڈالے گئے تھے اور پانچ ممالک غیر حاضر رہے جن میں ہندوستان بھی شامل تھا ۔ ہندوستان نے بعد ازاں کہا تھا کہ اس نے اس قرار داد میں بین الاقوامی فوجداری عدالت کا حوالہ ہونے کی وجہ سے غیر حاضری اختیار کی تھی کیونکہ ہندوستان اس کا رکن نہیں ہے ۔ ایتھوپیا ‘ کینیا ‘ مقدونیہ اور پیراگوئے کے ساتھ ہندوستان رائے دہی سے غیر حاضر رہا تھا ۔ مسٹر وادھوا نے کہا کہ سشما سوراج اور نبیل العربی نے عرب لیگ ممالک اور ہندوستان کی مناما میں ہونے والی ملاقات کے تعلق سے تبادلہ خیال کیا ۔ انہوں نے کہا کہ یہ ملاقات وزارتی سطح کی ہوگی اور ہندوستان نے اس اجلاس کیلئے 20 ڈسمبر کی تاریخ تجویز کی ہے ۔ اجلاس میں سشما سوراج نے ہندوستان کیلئے عرب ممالک کی اہمیت واضح کی اور کہا کہ ہندوستان کی توانائی سکیوریٹی اور عوام تا عوام رابطوں کی انتہائی اہمیت ہے ۔

TOPPOPULARRECENT