Tuesday , August 21 2018
Home / Top Stories / فلسطین میں مکمل ہڑتال اور احتجاجی مظاہرے

فلسطین میں مکمل ہڑتال اور احتجاجی مظاہرے

Worshippers chant as they wave Palestinian flags after Friday prayers on the compound known to Muslims as Noble Sanctuary and to Jews as Temple Mount in Jerusalem's Old City, as Palestinians call for a "day of rage" in response to U.S. President Donald Trump's recognition of Jerusalem as Israel's capital December 8, 2017. REUTERS/Ammar Awad

غزہ ۔ 8 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) امریکی سفارتخانہ کی مقبوضہ بیت المقدس منتقلی کے اعلان کے بعد فلسطین میں مکمل ہڑتال کی گئی جبکہ فلسطینی صدر محمود عباس کا کہنا ہیکہ فیصلے سے امریکہ کا قیام امن میں ثالث کا کردار ختم ہوگیا۔ فلسطینی صدر محمود عباس نے ٹیلیویژن پر قوم سے خطاب میں کہا کہ امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ کا اقدام اسرائیل کو فلسطینی سرزمین پر قبضے کو تقویت بخشے گا جبکہ ٹرمپ کا حالیہ اعلان بھی اسرائیل کو انعام دینے کے مترادف ہے۔ صدر محمود عباس نے کہا کہ امریکی صدر کا فیصلہ مقبوضہ بیت المقدس کی حقیقت کو تبدیل کرے گا اور اس معاملے پر اسرائیل کو کوئی قانونی حیثیت حاصل نہیں ہوگی۔ فلسطینی صدر نے کہا کہ ہم قومی آزادی حاصل کرکے رہیں گے۔ امریکی صدر کے اعلان سے امن مذاکرات کو خطرہ اور تشدد پسند عناصر کی حوصلہ افزائی ہوگی۔ فلسطین لبریشن آرگنائزیشن (پی ایل او) کا کہنا ہیکہ ڈونالڈ ٹرمپ کے فیصلے سے دو ریاستی حل تباہ ہوگیا اور امریکی صدر نے امریکہ کو مستقبل میں قیام امن کیلئے ثالثی کرنے کیلئے نااہل کردیا ہے۔

TOPPOPULARRECENT