فلم پدماوت کو سنسر بورڈ منظوری منسوخ کرنے کی درخواست مسترد

مداخلت کی گنجائش نہیں ۔ لا اینڈ آرڈر کی برقراری ہمارا کام نہیں۔ سپریم کورٹ ۔ جمشید پور میں احتجاج

نئی دہلی 19 جنوری ( سیاست ڈاٹ کام) سپریم کورٹ نے آج ایک درخواست کو مسترد کردیا جس میں استدعا کی گئی تھی کہ بالی ووڈ فلم ’ پدماوت ‘ کو سنسر بورڈ کی جانب سے دی گئی منظوری کو منسوخ کرنے فوری سماعت کی جائے ۔ چیف جسٹس دیپک مصرا اور جسٹس اے ایم کھانویلکر اور جسٹس ڈی وائی چندرا چوڑ پر مشتمل ایک بنچ نے درخواست گذار کے اس استدلال کو مسترد کردیا کہ اس فلم کی نمائش سے انسانی زندگیوں ‘ املاک اور لا اینڈ آرڈر کیلئے خطرہ پیدا ہوسکتا ہے ۔ عدالت نے وکیل ایم ایل شرما کی جانب سے دائر کردہ تازہ درخواست کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ لا اینڈ آرڈر کو برقرار رکھنا ہمارا کام نہیں ہے ۔ یہ حکومت کا کام ہے ۔ یہ درخواست مسترد کی جاتی ہے ۔ وکیل نے اپنی درخواست میں کہا تھا کہ اس فلم کو سنسر بورڈ کی جانب سے جو سرٹیفیکٹ جاری کیا گیا ہے اس کو مختلف بنیادوں پر مسترد کردیا جائے ۔ بنچ نے کہا کہ عدالت کی جانب سے کل ایک مناسب حکمنامہ جاری کردیا گیا ہے ۔ جب سنسر بورڈ کی جانب سے منظوری دیدی گئی ہے تو اس میں مداخلت کی کوئی گنجائش نہیں ہے ۔ عدالت نے کل ایک حکمنامہ جاری کرتے ہوئے 25 جنوری کو ملک بھر میں اس فلم کی نمائش کو منظوری دیدی تھی اور کچھ ریاستوں میں فلم کی نمائش پر عائد کردہ امتناع کو برخواست کردیا تھا ۔ عدالت نے دوسری ریاستوں کو بھی اس فلم کی نمائش پر کوئی امتناع عائد کرنے سے باز رکھا تھا ۔ عدالت نے کہا تھا کہ ریاستوں کی یہ دستوری ذمہ داری ہے کہ وہ لا اینڈ آرڈر برقار رکھے اور اس میں ان افراد کو تحفظ فراہم کرنا بھی شامل ہے جو اس فلم کا حصہ ہیں۔ اس دوران سپریم کورٹ احکام کے باوجود چیف منسٹر مدھیہ پردیش شیوراج سنگھ چوہان نے آج کہا کہ ایڈوکیٹ جنرل سے کہا گیا ہے کہ وہ فلم کی ریاست میں نمائش سے قبل سپریم کورٹ کے احکام کا جائزہ لیں۔ انہوں نے یہاں ایک تقریب میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ہم نے ایڈوکیٹ جنرل کو سپریم کورٹ احکام کا مطالعہ کرنے کو کہا ہے ۔ اس کے بعد ہم یہ دیکھیں گے کہ آیا ہم دوبارہ عدالت سے رجوع ہوسکتے ہیں یا نہیں۔ ہم نے اس پر ابھی تک کوئی فیصلہ نہیں کیا ہے ۔ حالانکہ مدھیہ پردیش میں اس فلم کی نمائش پر کوئی باضابطہ امتناع عائد نہیں کیا گیا تھا لیکن شیوراج سنگھ چوہان نے کہا تھا کہ اس فلم کی ریاست میں نمائش نہیں ہوگی ۔ انہوں نے کہا تھا کہ ’ جو کہا تھا وہ ہوگا ‘ ۔ اس دوران جمشید پور میں راجپوت برادری کے ارکان اور ہندو تنظیموں نے فلم پدماوت کے نمائش کے خلاف بائیک ریلی کا اہتمام کیا ۔ یہ ریلی ’ ماں پدماوتی سمان سمیتی ‘ کے بیانر تلے نکالی گئی ۔ اس میں اکھ بھارتیہ کشتریہ مہاسبھا ‘ جھارکھنڈ کشتریہ مہاسبھا اور راجپوت کرنی سینا نے حصہ لیا ۔

TOPPOPULARRECENT