Wednesday , November 22 2017
Home / Top Stories / فلپائن میں انتخابی تشدد‘ 10افراد ہلاک

فلپائن میں انتخابی تشدد‘ 10افراد ہلاک

انتخابات بحیثیت مجموعی پرامن ، الیکشن کمیشن کا ادعا
منیلا۔9مئی ( سیاست ڈاٹ کام ) کم از کم 10افراد پورے فلپائن میں رائے دہی کے دن تشدد کے دوران آج ہلاک ہوگئے ۔ ایک بندوق بردار نے مراکز رائے دہی پر اور گاڑیوں پر گھات لگاکر حملہ کیا اور رائے شماری مشینوں کا سرقہ کرلیا۔تاہم عہدیداروں نے اس تشدد کو یکادکا واقعات قرار دیا اور کہا کہ بحیثیت مجموعی انتخابات میں لاکھوں افراد نے اپنے حق رائے دہی سے استفادہ کرتے ہوئے ملک کے صدر اور دیگر 18ہزار ارکان کا انتخاب کیا ۔ رائے دہی پُرامن ہوئی ۔ بدترین حملوں میں 7افراد کو گھات لگاکر حملہ کرتے ہوئے روزیریو قصبہ میں گولی مار دی گئی ۔ گینڈولنگان میں جو ایک غربت زدہ قصبہ ہے ‘ جنوبی فلپائن کے صوبہ مگن ڈناؤ میںجو کشیدگی کا شکار مقام ہے جنگی سورما سیاستدانوں نے اپنی خانگی فوجیں قائم کر رکھی ہیں ایک رائے دہندے کو مرکز رائے دہی کے اندر گولی مار کر ہلاک کردیا گیا ۔ پولیس کے بموجب قریبی قصبہ سلطان قدرت میں جو ملک کا سب سے بڑا مسلم باغی گروپ کا مستحکم گڑھ ہے 20افراد نے ایک مرکز رائے دہی میں زبردستی داخل ہوکر کئی رائے دہی مشینوں کا سرقہ کرلیا ۔ پولیس سربراہ سینئر انسپکٹر عصمت مدین نے اس کی اطلاع دی ۔ شمالی صوبہ ابرا میں بدنام سیاستدانوں نے ایک دوسرے پر حملہ کیا ۔حریف امیدواروں کے حامیوں نے ایک دوسرے پر فائرنگ کی جس کی وجہ سے ایک شخص ہلاک اور دیگر دو زخمی ہوگئے ۔ صوبائی پولیس کے ترجمان مارسی گریس مارن نے اے ایف پی کو ٹیلی فون پر اس کی اطلاع دی ۔ پولیس نے دو افراد دوخواتین کو بندوقوں کے ساتھ گرفتار کرلیا جب کہ پہاڑی قصبہ لگایان میںباہمی تصادم ہوا تھا ۔ اس کے باوجود انتخابی کمشنر رووینہ گانزان نے کہا کہ تشدد سے انتخابی نتائج پر کوئی اثر مرتب نہیں ہوگا ۔

TOPPOPULARRECENT