Saturday , November 17 2018
Home / شہر کی خبریں / فلیٹ کلچر عام ، مستقبل میں مسائل

فلیٹ کلچر عام ، مستقبل میں مسائل

بلڈر سے غیر مجاز تعمیرات ، جی ایچ ایم سی کی خاموشی
حیدرآباد۔8نومبر(سیاست نیوز) شہر حیدرآباد کے ان علاقو ںمیں جہاں فلیٹ کلچر عام ہوتا جا رہاہے ان مقامات پر مستقبل قریب میں کئی مسائل کا سامنا مقامی عوام کو کرنا پڑسکتا ہے اور فلیٹس کی غیر مجاز تعمیرات سے عوام کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے کیونکہ بلڈرس کی جانب سے غیر مجاز تعمیرات کے علاوہ اجازت کے حصول کے ساتھ کی جانے والی تعمیرات میں بھی اصول و ضوابط کو بالائے طاق رکھتے ہوئے کی جانے والی تعمیرات کے سبب شہریوں کو مشکلات کا سامناکرنا پڑ رہاہے کیونکہ مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد کی جانب سے اس طرح کی تعمیرات کے سلسلہ میں اختیار کردہ خاموشی کے سبب صورتحال انتہائی ابتر ہوتی جا رہی ہے۔ حکومت تلنگانہ نے مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد کے عہدیداروں کو اس بات کی ہدایت دی تھی کہ وہ شہر میں غیر قانونی اور غیر مجاز تعمیرات کے خلاف سخت کاروائی کرے لیکن شہر کے تیزی سے ترقی حاصل کرنے والے علاقہ ٹولی چوکی میں بلڈرس کی جانب سے کی جانے والی ان غیر قانونی اور غیر مجاز تعمیرات کے خلاف کاروائی کے بجائے جی ایچ ایم سی کے متعلقہ شعبہ کے عہدیداروں کی جانب سے اختیار کئے جانے والے رویہ سے ان بلڈرس کی حوصلہ افزائی ہورہی ہے۔ٹولی چوکی کے علاقہ میں تعمیراتی کامو ںکے لئے محکمہ آبرسانی کی پائپ لائن کو نقصان پہنچائے جانے پر محکمہ آبرسانی کے عہدیداروں نے پولیس میں شکایت درج کرواتے ہوئے کہا کہ اب تک دو مرتبہ اس پائپ لائن کو نقصان پہنچایا جاچکا ہے اور اس طرح پائپ لائن کو نقصان پہنچایاجانا نہ صرف عوام کو تکلیف دینے کی بعد ہے بلکہ اس طرح کی حرکتوں سے شہریوں کو سربراہ کئے جانے والے پینے کے پانی کے آلودہ ہونے اور انہیں سربراہی بند ہونے کا بھی خدشہ ہوتا ہے۔ ٹولی چوکی کے مکینوں کا کہناہے کہ حالیہ عرصہ میں ٹولی چوکی کی رہائشی کالونیوں میں چھوٹے مکانات کی خریدی کے ذریعہ ان کی جگہ 4تا5 منزلہ عمارتوں کی تعمیر کا کلچر شروع ہوا ہے جو کہ علاقہ کے لئے انتہائی خطرناک رجحان کا باعث بن سکتا ہے کیونکہ رہائشی کالونیوں میں جو سہولتیں فراہم کی جا رہی ہیں وہ موجودہ آبادی کے مطابق ہیں جبکہ اگر ہمہ منزلہ کامپلکس کی تعمیر عمل میں لائی جاتی ہے تو ایسی صور ت میں مکینوں کی تعداد میں زبردست اضافہ ریکارڈ کیا جا سکتا ہے اور ان علاقو ںمیں سہولتوں کا فقدان ہوتا چلا جائے گا اسی لئے مجلس بلدیہ عظیم تر حیدرآباد کے عہدیداروں کو کسی بھی ہمہ منزلہ عمارت کی تعمیر کی اجازت کی فراہمی سے قبل اس بات کا جائزہ لینا چاہئے کہ کیا تعمیری اجازت طلب کرنے والے بلڈر کی جانب سے قوانین کی پاسداری کی جا رہی ہے یا نہیں اور کیا وہ عمارت درکار زمین پر تعمیر کی جائے گی یا کسی چھوٹے سے زمین کے ٹکڑے پر یہ عمارت کی تعمیر عمل میں لائی جائے گی۔

TOPPOPULARRECENT