Sunday , September 23 2018
Home / ہندوستان / فوجی کارروائی میں کشمیری نوجوان کی ہلاکت کیخلاف احتجاجی مظاہرے

فوجی کارروائی میں کشمیری نوجوان کی ہلاکت کیخلاف احتجاجی مظاہرے

سرینگر۔/14اپریل، ( سیاست ڈاٹ کام ) ضلع پواما کے علاقہ ترائی میں فوجی کارروائی میں ایک نوجوان کی ہلاکت کے خلاف آج احتجاجی مظاہرہ کے دوران پولیس کے ساتھ جھڑپ میں کم از کم 6افراد زخمی ہوگئے جبکہ کل پیش آئے اس واقعہ میں انکاؤنٹر کے مقام سے ایک اور مشتبہ عسکریت پسند کی نعش دستیاب ہوئی ہے۔ فوجی کارروائی میں خالد مظفر کی ہلاکت کے خلاف ہزاروں

سرینگر۔/14اپریل، ( سیاست ڈاٹ کام ) ضلع پواما کے علاقہ ترائی میں فوجی کارروائی میں ایک نوجوان کی ہلاکت کے خلاف آج احتجاجی مظاہرہ کے دوران پولیس کے ساتھ جھڑپ میں کم از کم 6افراد زخمی ہوگئے جبکہ کل پیش آئے اس واقعہ میں انکاؤنٹر کے مقام سے ایک اور مشتبہ عسکریت پسند کی نعش دستیاب ہوئی ہے۔ فوجی کارروائی میں خالد مظفر کی ہلاکت کے خلاف ہزاروں افراد احتجاج کیلئے اکٹھا ہوگئے اور ادعا کیا کہ مہلوک ایک شہری تھا، لیکن فوج نے اسے عسکریت پسند قرار دیا ہے۔ دریں اثناء جنگلاتی علاقہ میں فوج کی تلاشی مہم کے دوران آج حزب المجاہدین کے عسکریت پسند یونس احمد غنی کی نعش دستیاب ہوئی جو کہ اس انکاؤنٹر میں مارا گیا تھا۔ پولیس نے آج یہ اطلاع دی اور بتایا کہ ترائی ٹاؤن میں جیسے ہی مظفر کی نعش لائی گئی مقامی عوام کا ایک گروپ نعش کے ساتھ ایک جلوس نکالا اور سینکڑوں افراد نے سیکوریٹی فورسیس پر سنگباری شروع کردی۔ احتجاجیوں کو منتشر کرنے کیلئے سیکورٹی فورس نے آنسو گیس کے شیل داغے اور بندوقیں دکھاکر خوفزدہ کیا جس کے نتیجہ میں 6افراد معمولی زخمی ہوگئے۔ سرکاری ذرائع نے بتایا کہ مقامی ہاسپٹل میں زخمیوں کو ابتدائی طبی امداد فراہم کرنے کے بعد ڈسچارج کردیا گیا ہے۔

انہوں نے بتایا کہ احتجاج کے دوران بعض اشرار نے علاقہ ترائی میں سی آر پی ایف کے ایک سب انسپکٹر سے میگزین کے ساتھ ایک رائفل چھین لی جبکہ احتجاجیوں کا یہ الزام ہے کہ مہلوک نوجوان عسکریت پسندی میں ملوث نہیں تھا جسے فوج نے فرضی انکاؤنٹر میں ہلاک کردیا۔ تاہم فوج کا دعویٰ ہے کہ یہ نوجوان عسکریت پسند تھا۔ فوج کے ترجمان نے کل ایک صحافتی بیان میں بتایا کہ مہلوک نوجوان کی تحویل سے 2عدد اے کے 47 رائفل اور دیگر اشیاء برآمد ہوئی تھیں۔ دریں اثناء سید شاہ گیلانی کی زیر قیادت ترائی گاؤں اور متصل علاقوں میں بند منانے کا اعلان کیا ہے۔ علاوہ ازیں پولیس نے آج علحدگی پسند قائدین محمد یسین ملک اور مسرت عالم بھٹ کو اونتی پورہ میں اس وقت حراست میں لے لیا جب وہ ضلع پلواما کے ترائی گاؤں کی سمت جارہے تھے۔ جہاں پر کل فوجی کارروائی میں 3مشتبہ عسکریت پسند مارے گئے تھے۔ پولیس نے بتایا کہ ان دونوں قائدین کو احتیاطی اقدام کے طور پر گرفتار کرلیا ہے

تاکہ علاقہ ترائی میں کشیدہ حالات کو ابتر ہونے سے بچایا جاسکے جہاں پر آج سیکوریٹی فورس اور احتجاجیوں کے درمیان تصادم کا سلسلہ جاری رہا۔ بعد ازاں فوج نے بتایا کہ ضلع پلواما کے علاقہ ترائی میں مخالف عسکریت پسند کارروائی میں ہلاک نوجوان دراصل حزب المجاہدین کا سرگرم کارکن تھا اور اس دعویٰ کو مسترد کردیا کہ وہ شہری تھا۔ فوج کے ترجمان نے کہا کہ بچو جنگلاتی علاقہ میں انکاؤنٹر کا واقعہ اس وقت پیش آیا جب سیکوریٹی فورس کے گشتی دستہ پر عسکریت پسندوں نے اچانک فائرنگ کردی۔ فائرنگ کے تبادلہ میں ایک سپاہی زخمی ہوگیا۔ تلاشی مہم کے دوران ایک نعش کے ساتھ ایک عدد AK47رائفل دستیاب ہوئی۔ جس کی شناخت حزب المجاہدین کمانڈر برہان کے بھائی خالد وانی کی حیثیت سے کی گئی۔ یہ رائفل گزشتہ سال جولائی میں ایک پولیس جوان سے چھین لی گئی تھی۔ پولیس نے انکاؤنٹر کے علاقہ سے 3نوجوانوں کو بھی گرفتار کرلیا جن سے پوچھ تاچھ کے دوران پتہ چلا کہ خالد نے جنگل میں روپوش اپنے بھائی برہان سے ملاقات کیلئے لے گیا تھا۔

TOPPOPULARRECENT