Wednesday , September 19 2018
Home / شہر کی خبریں / فوڈ سیکوریٹی بل سے غذائی اجناس پر بھاری سبسیڈی کی فراہمی

فوڈ سیکوریٹی بل سے غذائی اجناس پر بھاری سبسیڈی کی فراہمی

حیدرآباد ۔ 3 ۔ فروری : ( سیاست نیوز ) : ڈاکٹر ای اے صدیق اعزازی ڈائرکٹر ، آچاریہ این جی رنگا اگریکلچرل یونیورسٹی نے آج کہا کہ اگرچیکہ فوڈ سیکوریٹی بل سے غریبوں کو غذائی اجناس پر بھاری سبسیڈی فراہم ہوگی لیکن اس کے لیے 65 ملین ٹن غذائی اجناس کی زائد ضرورت ہوگی جو کہ آسان کام نہیں ہے ۔ انہوں نے کہا کہ غذائی اجناس کی ضرورت میں اضافہ کے سا

حیدرآباد ۔ 3 ۔ فروری : ( سیاست نیوز ) : ڈاکٹر ای اے صدیق اعزازی ڈائرکٹر ، آچاریہ این جی رنگا اگریکلچرل یونیورسٹی نے آج کہا کہ اگرچیکہ فوڈ سیکوریٹی بل سے غریبوں کو غذائی اجناس پر بھاری سبسیڈی فراہم ہوگی لیکن اس کے لیے 65 ملین ٹن غذائی اجناس کی زائد ضرورت ہوگی جو کہ آسان کام نہیں ہے ۔ انہوں نے کہا کہ غذائی اجناس کی ضرورت میں اضافہ کے ساتھ ہندوستان کو انٹر سب اسپیسیفک ہائبرڈس کو اختیار کرنا ہوگا تب ہی فصلوں میں اضافہ ہوسکتا ہے ۔ 2050 تک غذائی اجناس کی مانگ میں مزید 70 فیصد کا اضافہ ہوگا

اور ہندوستان کو 40 ملین ٹن غذائی اجناس کی پیداوار کرنی ہوگی جو کہ مشکل ہے کیوں کہ اس کے لیے زمین نہیں ہے اور موسمی تبدیلی نہیں ہورہی ہے ۔ آج یہاں زراعت اور ہارٹیکلچرل سائنسس پر دوسری انٹرنیشنل کانفرنس سے مخاطب کرتے ہوئے پروفیسر ڈاکٹر ای اے صدیق نے جو مسٹر رائس کے نام سے بھی جانے جاتے ہیں کہا کہ فی الوقت ہندوستان کی حالت 260 ملین ٹن غذائی اجناس کی پیداوار کے ساتھ ٹھیک ہے جو کہ یومیہ فی کس 450 گرام غذائی اجناس کی فراہمی کیلئے کافی ہے تاہم ابھی 240 ملین ٹن کی پیداوار نہیں ہوپارہی ہے کیوں کہ کاشت کے اخراجات میں اضافہ کے باعث اس کے پاس درکار اخراجات کو پورا کرنے کیلئے قوت خرید نہیں ہے کاشت کاری کے اخراجات میں اضافہ ایک سنگین مسئلہ ہے ۔۔

TOPPOPULARRECENT