Wednesday , December 12 2018

فیس بک کاسیاسی اشتہارات کیلئے مزید شفافیت کا فیصلہ

واشنگٹن ۔ 7 اپریل ۔(سیاست ڈاٹ کام) فیس بک نے بھی اب ’’دودھ کا جلا چھانچھ پھونک پھونک کر پینے ‘‘ کا رویہ اپنالیا ہے اور سیاسی نوعیت کے اشتہارات کو اپنے پلیٹ فارم پر اُسی وقت شائع کرے گا جب تک اشتہار دینے والے کی مکمل شناخت نہ ہوجائے اور ساتھ ہی ساتھ اشتہار کیلئے رقم کی ادائیگی کون کررہاہے اُس کی بھی پوری معلومات حاصل کی جائے گی ۔سوشیل میڈیا کے میدان میں ایک بڑا پلیٹ فارم تصور کئے جانے والے فیس بک نے دراصل اپنی شفافیت اور جوابدہی کے موقف کو سیاسی مہمات کے دوران برقرار رکھنے کا ایک بروقت فیصلہ کیا ہے ۔ سوشیل نیٹ ورکنگ پلیٹ فارم کو حالیہ دنوں میں اس بات پر شدید تنقیدوں کا سامنا کرنا پڑا تھا کہ اُسے انتخابات پر اثرانداز ہونے کے لئے استعمال کیا جارہا ہے۔ لہذا اب ایسے لوگ جو سیاسی نوعیت کے اشتہارات شائع کروانا چاہتے ہیں اُنھیں اپنی شناخت ظاہر کرنی پڑے گی اور یہ بھی بتانا پڑے گاکہ اُن کامحل وقوع کیا ہے ۔ یاد رہے کہ فیس بک کے سی ای او مارک زکربرگ آئندہ ہفتہ کانگریس کے روبرو پیش ہونے والے ہیں جہاں انھیں اس بات کاجواب دینا ہے کہ 87 ملین افراد کے شخصی ڈیٹا کا افشاء کیسے ہوا جس کے لئے کیمبرج انالاٹیکا کو بھی مورد الزام ٹھہرایا گیاہے جو ایک برطانوی سیاسی کنسلٹنسی ہے جس نے صدر ڈونالڈ ٹرمپ کی صدارتی انتخابی مہمات کی ذمہ داری سنبھال رکھی تھی ۔

TOPPOPULARRECENT