Sunday , November 19 2017
Home / کھیل کی خبریں / فیفا کی جانب سے بلاٹر اور پلاٹینی پر 8 سال کی پابندی

فیفا کی جانب سے بلاٹر اور پلاٹینی پر 8 سال کی پابندی

زیورخ۔21 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام ) ضابطہ اخلاق سے متعلق تحقیقات کے بعد فٹبال کی عالمی تنظیم فیفا  نے معطل شدہ  79 سالہ صدر سیپ بلاٹر اور یوئیفا کے سربراہ 60 سالہ میشل پلاٹینی پر 8 سال کی پابندی عائد کر دی گئی ہے۔ دونوں افراد فٹبال سے متعلق کسی بھی سرگرمی میں حصہ نہیں لے سکتے اور پابندی فوری طور پر نافذ العمل ہے۔ پابندی کے علاوہ دونوں عہدیداروں پر جرمانہ بھی عائد کیا گیا ہے جیسا کہ بلاٹر پر سوئٹزرلینڈ کی کرنسی کے اعتبار سے 50 ہزار اور پلاٹینی پر 80 ہزار فرانکس کا جرمانہ عائد کیا گیا ہے۔ عدالت کی جانب سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا ہے کہ مذکورہ عہدیداروں نے اپنے عہدوں اور اختیارات کا غلط استعمال کیا ہے۔ فیفا کی عدالت نے ان دونوں کے خلاف کرپشن کے الزامات خارج کردئے ہیں لیکن کہا ہے کہ مفادات کا تضادکے ضمن میں دونوں عہدیدار قصوروار پائے گئے ہیں۔ 79 سالہ سیپ بلاٹر پر حالیہ پابندی لگنے کے بعد فٹ بال کی عالمی تنظیم میں ان کا طویل دور ختم ہوگیا ہے کیونکہ فیفا کی جانب سے عائد اس پابندی کا فوری اطلاق ہوگا۔ بلاٹر 1998 سے فیفا کے صدر کی حیثیت سے خدمات سرانجام دے رہے تھے۔ تاہم وہ پہلے ہی کہہ چکے ہیں کہ وہ فروری میں ہونے والے صدارتی انتخابات میں حصہ نہیں لیں گے۔دوسری جانب 60 سالہ پلاٹینی کے متعلق یہ  امکان تھا کہ وہ بلاٹر کی جگہ فیفا کے نئے صدر ہوں گے۔ انھوں نے تین مرتبہ یورپین فٹ بالر آف دی ایر کا اعزاز حاصل کیا تھا اور وہ فرانس کی ٹیم کے کپتان کے فرائض انجام دئے  تھے ۔علاوہ ازیں 2007 میں یوئیفا کا عہدہ سنبھالا تھا۔ تحقیقات میں بلاٹر کی جانب سے 2011 میں پلاٹینی کی دی گئی 2.01 ملین ڈالرس کی کوئی قانونی حثیت نہیں ہے اور یہ فیفا کے ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی ہے۔ فیفا کی جانب سے عائد کی جانے والی س پابندی کے ضمن میں بلاٹر خود اپنی جانب سے کی جانے والی پریس کانفرنس میں کہا ہے کہ وہ اس فیصلہ کی خلاف اپنی کارروائی کریںگے۔ بلاٹر کے بموجب وہ اپنے اور فیفا کے لئے لڑائی لڑیں گے۔ فیفا کی جانب سے کئے جانے والے سخت فیصلہ کے بعد ماہرین کا ماننا ہے کہ اس فیصلہ کے بعد ان دو عہدیداروں کا کریر جہاں ایک جانب ختم ہوگیا ہے وہیں ان دونوں کی وجہ سے فیفا کو جو نقصان ہوا ہے اس پر پابجائی آسان نہیں ہوگی۔ بلاٹر اور پلاٹینی پر عائد پابندی کے بعد فیفا کے نئے صدر کی بحث کا آغاز ہوچکا ہے اور اس عہدہ کی دوڑ میں بحرین سے تعلق رکھنے والے ایشن فٹبال کے صدر شیخ سلمان بن ابراہیم بن الخلیفہ‘اردن سے تعلق رکھنے والے فیفا کے سابق نائب صدر شہزادہ علی بن الحسین کے ہمراہ ٹوکیو سیکسویلے‘گیانی انفینٹینو اور جیروم چیانپینج قابل ذکر نام ہیں۔

TOPPOPULARRECENT