Tuesday , December 11 2018

فیول قیمتوں میں اضافہ پر اظہار ناراضگی

نظام آباد:16؍ مئی ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز)پٹرول و ڈیزل کی قیمتوں میں اضافہ کے سبب ضلع نظام آباد کی عوام کو ہر ماہ 15 کروڑ روپئے کا زائد بوجھ پڑرہا ہے۔ ضلع نظام آباد میں 191 پٹرول بنکس ہے ان میں آئی او ایل کے 110، ہندوستان پٹرولیم کے 36 ،بھارت پٹرولیم کے 45 پٹرول بکنس ہے۔ ضلع میں تقریباً6لاکھ ڈیزی اور پٹرول استعمال کئے جانے والی جملہ گاڑیاں ہے۔ آرٹی اے کے عہدیداروں کے مطابق ان گاڑیوں کو ہر روز پٹرول اور ڈیزل کی ضرورت ناگزیر ہے۔ پٹرول فی لیٹر 72 روپئے 12 پیسے تھا لیکن 3 روپئے 13 پیسے کے اضافہ کی وجہ سے 75 روپئے 62 پیسے نئی قیمت مقرر کی گئی ہے۔ ڈیزل 56 روپئے 91 پیسے تھالیکن 2 روپئے 71 پیسے سے نئی قیمت 59 روپئے 91 پیسے مقرر کی گئی ہے۔ضلع میں ہر روز 3.50 لاکھ لیٹر پٹرول کا استعمال ہورہا ہے نئی قیمت کے مطابق ہر روز 10.95لاکھ روپئے کا بوجھ عائد ہورہا ہے۔ اس طرح ہر ماہ 3 کروڑ 28لاکھ روپئے کا بوجھ ضلع کی عوام پرپڑرہا ہے اور ڈیزل ہر روز 15لاکھ لیٹر استعمال ہورہا ہے اور ہر روز 40.65لاکھ روپئے کا بوجھ عائد ہورہا ہے اس طرح ہر ماہ 12.19کروڑ روپئے کا بوجھ عائد ہورہا ہے۔ ضلع میں پٹرول اور ڈیزل کی قیمت کے اضافہ کے سبب عوام میں شدید ناراضگی ظاہر کی جارہی ہے اور 15 یوم میں 2 مرتبہ پٹرول اور ڈیزل کی قیمت میں اضافہ پر حکومت کیخلاف ناراضگی ظاہر کی جارہی ہے۔

TOPPOPULARRECENT