Sunday , December 17 2017
Home / کھیل کی خبریں / فیڈرر اور واؤرنکا کل سیمی فائنل میں مدمقابل

فیڈرر اور واؤرنکا کل سیمی فائنل میں مدمقابل

نیویارک، 10 سپٹمبر (سیاست ڈاٹ کام) عالمی نمبر دو روجر فیڈرر اور ان کے ہم وطن اسٹان واؤرنکا کوارٹر فائنل میں کامیابی سمیٹ کر یو ایس اوپن کے سیمی فائنل میں پہنچ گئے ہیں۔ نیویارک میں جاری سال کے آخری گرانڈ سلام ٹینس ٹورنمنٹ میں 17 گرانڈ سلام خطابات جیتنے والے سوئس کھلاڑی فیڈرر نے فرانس کے رچرڈ گاسکٹ کو ڈیڑھ گھنٹے سے بھی کم وقت میں 6-3، 6-3، 6-1 سے شکست دے کر ٹورنمنٹ کے سیمی فائنل میں رسائی حاصل کرلی۔ مینس سنگلز کے دوسرے کوارٹر فائنل میچ میں سوئٹزرلینڈ کے واؤرنکا نے جنوبی افریقہ کے کیون اینڈرسن کو یکطرفہ مقابلے میں 6-4، 6-4، 6-0 سے شکست دے سیمی فائنل میں جگہ بنا لی جہاں ان کا مقابلہ ہم وطن اسٹار فیڈرر سے ہو گا۔ ویمن سنگلز کے کوارٹر فائنل میں دلچسپ مقابلے کے بعد رومانیہ کی سمونا ہالپ نے بیلا روس سے تعلق رکھنے والی وکٹوریہ آزارینکا جبکہ اٹلی کی ٹینس اسٹار فلاویا پنیٹا نے جمہوریہ چیک کی پیٹرا کویٹوا کو ہرا کر سیمی فائنل تک رسائی حاصل کر لی۔ جہاں تک فیڈرر۔ واؤرنکا مقابلے کا معاملہ ہے،

 

یہ آل سوئس میچ ہے جس میں ڈرا میں شامل دونوں کھلاڑی ٹورنمنٹ میں درست وقت پر عروج کی طرف گامزن ہیں۔ فیڈرر نے ابھی تک کوئی سٹ ڈراپ نہیں کیا اور واؤرنکا نے صرف ایک سٹ ہارا ہے۔ فیڈرر نے واؤرنکا کے مقابل اپنے کریئر میں کافی غلبہ پایا، جیسا کہ وہ 16 مقابلے جیتے اور صرف تین ہارے ہیں۔ ’’میں اعداد و شمار جاننا نہیں چاہتا ہوں!‘‘ یہ الفاظ واؤرنکا کے ہیں جنھوں نے اینڈرسن کے مقابل اپنی کوارٹر فائنل جیت کے بعد کہے قبل اس کے کہ ان سے فیڈرر سے متعلق کچھ بھی پوچھا جاتا۔ تاہم فیڈرر کے غلبہ کو دیکھتے ہوئے اس میں کوئی تعجب نہیں کہ اعداد و شمار انھیں بہتر کھلاڑی قرار دیتے ہیں۔ ہارڈ کورٹس پر وہ واؤرنکا کے خلاف بے نقص ریکارڈ کے حامل ہیں، جیسا کہ وہ اپنے تمام 11 میچز جیت چکے ہیں۔ فیڈرر کے مقابل واؤرنکا کی تینوں کامیابیاں نسبتاً سست کلے کورٹس پر درج ہوئی ہیں، لیکن وہاں بھی فیڈرر کو 4-3 کی برتری حاصل ہے۔یہ دونوں کی گرانڈ سلام ٹورنمنٹس میں چھٹی ملاقات رہے گی جس میں فیڈرر کو 4-1 کی برتری حاصل ہے۔ ان کے ابتدائی تین مقابلوں میں فیڈرر نے تو کوئی سٹ نہیں ہارا تھا۔ تاہم واؤرنکا کیلئے واحد جیت 2015ء فرنچ اوپن کے کوارٹر فائنلس میں آئی، جہاں انھوں نے فیڈرر کو سیدھے سٹوں میں شکست دی تھی۔

TOPPOPULARRECENT