Tuesday , September 25 2018
Home / کھیل کی خبریں / فیڈرر ریکاڈر کامیابی کے ساتھ سیمی فائنلز میں داخل

فیڈرر ریکاڈر کامیابی کے ساتھ سیمی فائنلز میں داخل

 

انڈین ویلز۔16مارچ (سیاست ڈاٹ کام )عالمی نمبر ایک ٹینس کھلاڑی36 سالہ راجر فیڈرر اپنی مکمل فارم میں ہیں اور انہوں نے ایک مرتبہ پھر اپنے نوجوان حریف جنوبی کوریا کے چونگ ہیون کو راست سٹوں میں7-5، 6-1سے شکست دے کر انڈین ویلز ٹینس ٹورنمنٹ کے سیمی فائنلز میں جگہ بنا نے کے علاوہ اپنا عالمی نمبر ایک مقام برقرار رکھ لیا ہے۔جنوری میں آسٹریلین اوپن میں چونگ کو سیمی فائنل میں فیڈرر کے خلاف 6۔1 ،5۔2 سے پچھڑنے کے بعد پیر میں چھالے کی وجہ سے مقابلے سے سبکدوش ہونا پڑا تھا جبکہ سوئس کھلاڑی نے آسٹریلین اوپن کا خطاب پر قبضہ کر20 واں گرانڈ سلام جیتا تھا۔21 سالہ چنگ کو ایک مرتبہ پھر شکست دے کر فیڈرر نے اس سال مسلسل16 مقابلوں میں ناقابل تسخیر رہنے اور12سال پہلے بنائے اپنے ہی ریکارڈ کی برابری کر لی۔پہلے سٹ میں اگرچہ چونگ نے ماسٹر فیڈررر کے خلاف کچھ جدوجہد ضرور کی ۔فیڈرر کا اب سیمی فائنل میں بورنا کورچ سے مقابلہ ہوگا جنہوں نے کیون اینڈرسن کو 2۔6،6۔4 ،7۔6 سے شکست دی۔دنیا کے49 ویں نمبر کے کروشین کھلاڑی نے اس سے پہلے بھی اینڈرسن کے خلاف بغیر سٹ گنوائے اپنے تینوں میچ جیتے ہیں۔خاتون زمرے میں امریکہ کی وینس ولیمز نے فتح کے سلسلے کو آگے بڑھاتے ہوئے 17 برسوں میں پہلی مرتبہ انڈین ویلز ٹینس ٹورنمنٹ کے سیمی فائنل میں داخلہ حاصل کر لیا ہے جہاں ان کا سامنا روس کی ڈاریا کساتکنا سے ہوگا۔وینس نے اسپین کی کارلا سواریز نواروکوکوارٹر فائنل میں 6۔3،6۔2سے شکست دی۔ امریکی کھلاڑی اب کساتکنا سے مقابلے کے لیے اتریں گی جنہوں نے انجلک کربر کو 6-0،6-2 سے شکست دی۔سواریز کی وینس کے خلاف یہ مسلسل چوتھی شکست ہے اور وہ میچ میں سات میں سے صرف ایک مرتبہ ہی امریکی کھلاڑی کی سروس توڑ سکیں۔یہ17 برسوں میں پہلا موقع ہے جب وینس انڈین ویلز کے سیمی فائنل میں پہنچی ہیں۔سال2001 میں سیمی فائنل میں اپنی بہن سرینا کے ساتھ میچ سے پہلے ہی وینس ٹورنمنٹ سے دستبردار ہوگئی تھیں جبکہ نسلی تبصرہ سے ناراض ہوکر سال2002 اور2015میں انہوں نے ٹورنمنٹ میں حصہ نہیں لیا تھا۔وینس نے میچ کے بعد کہا کہ میں جب 16 سال کی تھی تب میں یہاں آئی تھی اور جیتنے کے قریب پہنچی تھی۔

TOPPOPULARRECENT