فیڈرر کو شکست ، جوکووچ انڈین ویلس اوپن چمپین

انڈین ویلس ۔ 17 ۔ مارچ (سیاست ڈاٹ کام) نواک جوکووچ چار سال کے عرصہ میں پہلی مرتبہ انڈین ویلس میں بغیر خطاب کے پہنچے تھے لیکن انہوں نے اتوار کو کھیلے گئے بی این پی پریباس اوپن کے خطابی مقابلہ میں پہلے سٹ میں ناکامی کے باوجود راجر فیڈرر کو 3-6 ، 6-3 ، 7-6(3) سے شکست دیتے ہوئے خطاب اور ایک ملین ڈالر کا چیک حاصل کرلیا۔ کامیابی کے بعد اظہار خیال کر

انڈین ویلس ۔ 17 ۔ مارچ (سیاست ڈاٹ کام) نواک جوکووچ چار سال کے عرصہ میں پہلی مرتبہ انڈین ویلس میں بغیر خطاب کے پہنچے تھے لیکن انہوں نے اتوار کو کھیلے گئے بی این پی پریباس اوپن کے خطابی مقابلہ میں پہلے سٹ میں ناکامی کے باوجود راجر فیڈرر کو 3-6 ، 6-3 ، 7-6(3) سے شکست دیتے ہوئے خطاب اور ایک ملین ڈالر کا چیک حاصل کرلیا۔ کامیابی کے بعد اظہار خیال کرتے ہوئے جوکووچ نے کہا کہ بغیر کسی خطاب کے یہاں پہنچنے کے بعد کامیابی کیلئے غیر یقینی صورتحال تھی ۔ علاوہ ازیں ابتدائی سیٹ میں نشیب و فراز کے بعد مقابلہ میں حالات مزید سخت ہوچکے تھے۔ جوکو وچ کو دوسرے سیٹ میں فیڈرر کی سرویس توڑنے کا اس وقت موقع ملا جب وہ 5-3 کی سبقت سے آگے تھے ۔ فیڈرر اور جوکووچ کے درمیان 33 ویں مقابلہ دوران جوکو وچ نے کامیابی حاصل کی

لیکن فتوحات کے معاملہ میں فیڈرر 17-16 کے ذریعہ ہنوز سبقت میں ہے جس میں گزشتہ ہفتہ دبئی میں منعقدہ دبئی اوپن کا سیمی فائنل بھی شامل ہے جہاں فیڈرر نے پہلے سیٹ میں شکست کے باوجود جوکووچ کو شکست دیتے ہوئے سیزن کا پہلا خطاب حاصل کیا ہے ۔ انڈین ویلس میں خطاب حاصل کرنے کے باوجود جوکووچ عالمی درجہ بندی میں ہنوز دوسرے مقام پر فائز ہیں جبکہ فیڈرر نے اپنی درجہ بندی میں تین مقامات کی چھلانگ لگاتے ہوئے پانچویں مقام پر پہنچ چکے ہیں۔ فیڈرر کو یہاں کامیابی حاصل کرتے ہوئے اس سے قبل اینڈری اگاسی کی جانب سے 34 برس کی عمر میں سنسناتی اوپن 2004 ء میں معمر ترین چمپین ہونے کے ریکارڈ کو مساوی کرنے کا موقع تھا جیسا کہ وہ انڈین ویلس میں 32 سال کی عمر میں خطاب حاصل کرنے والے معمر ترین چمپین بن سکتے تھے ۔

TOPPOPULARRECENT