Saturday , December 15 2018

فیڈرر کو نمبر ایک مقام کیلئے 500 نشانات درکار

پیرس۔ 27 اکتوبر (سیاست ڈاٹ کام) آبائی شہر بیسل میں ریکارڈ چھٹے سوئس اوپن خطاب حاصل کرنے کے بعد راجر فیڈرر اور عالمی نمبر ایک سربیائی ٹینس اسٹار نواک جوکووچ کے درمیان عالمی نمبر ایک مقام کی بقاء اور حصول کی دوڑ مزید مسابقتی ہوگئی ہے جیسا کہ چھٹے سوئس خطاب کے ذریعہ فیڈرر نے جوکووچ سے نمبر ایک مقام کے حصول کیلئے درکار نشانات کو مزید کم کرلیا ہے جیسا کہ پیر کو جاری کردہ تازہ ترین عالمی ٹینس کی درجہ بندی میں نواک جوکووچ نے 9010 نشانات کے ذریعہ پہلے مقام پر موجود ہیں جبکہ فیڈرر کو تازہ ترین کامیابی کے بعد جو نشانات حاصل ہوئے ہیں، اس کی بدولت وہ8520 نشانات کے ذریعہ دوسرے مقام پر موجود ہیں۔ اس طرح دونوں کھلاڑیوں کے درمیان 500 سے کم نشانات کا فرق باقی رہ گیا ہے، نیز رواں ہفتہ شروع ہوچکے پیرس اوپن کے علاوہ 9 نومبر کو شروع ہونے والے سیزن کے آخری ٹورنمنٹ اے ٹی پی ورلڈ ٹور فائنلس جس میں درجہ بندی کے سرفہرست 8 کھلاڑیوں کے درمیان مقابلے ہوں گے جن میں شرکت کرتے ہوئے فیڈرر جہاں مزید نشانات حاصل کرسکتے ہیں، وہیں گزشتہ ہفتہ اسٹیفن کی خاندان میں آمد کی خوشیاں منا چکے جوکووچ کو ان دو ہفتوں میں کئی نشانات کا دفاع کرنا ہے۔ 17 مرتبہ کے گرانڈ سلام چمپین فیڈرر نے گزشتہ ہفتہ بیسل میں خطابی کامیابی کے ذریعہ اپنے کریر کا 82 واں خطاب حاصل کیا ہے اور یہ خطاب متواتر 12 مقابلوں میں ناقابل تسخیر رہنے کا ثمرآور نتیجہ ہے۔ علاوہ ازیں رواں سیزن فیڈرر نے 66 فتوحات اور 10 ناکامیوں کے بہترین ریکارڈ کے ذریعہ نمبر کی دعویداری کو مستحکم کرلیا ہے۔ گزشتہ ہفتہ جوکووچ کے گھر پہلے بیٹے کی پیدائش ہوئی جس کا اسٹیفن نام رکھا گیا نیز اس وجہ سے وہ گزشتہ ہفتہ مسابقتی ٹینس سے دور رہے اور فیڈرر جنہیں سوئس اوپن خطاب حاصل کرنے کا موقع ملا ہے، ان وجوہات نے دونوں کھلاڑیوں کے درمیان نمبر ایک مقام کیلئے نشانات کا جو واضح فرق تھا، اسے کم کیا ہے۔ علاوہ ازیں 33 سالہ فیڈرر کو ڈیوس کپ جو کہ 21 نومبر کو شروع ہوگا، اس میں شرکت کرتے ہوئے درجہ بندی کے مزید نشانات حاصل کرنے کا موقع بھی دستیاب ہے۔ فیڈرر کی جانب سے نمبر ون کے مقام کے حصول اور جوکووچ کی جانب سے نمبر ایک مقام کی بقاء کے دوران لندن میں کھیلے جانے والے اے ٹی پی ورلڈ ٹور فائنلس میں دیگر کھلاڑیوں کی رسائی بھی سنگلس مقابلوں میں توجہ کا مرکز ہے۔ برطانوی ٹینس اسٹار اینڈی مرے نے پیرس اوپن میں شرکت سے قبل گزشتہ روز ویلنشیا اوپن خطاب حاصل کرتے ہوئے لندن ایونٹ میں اپنی رسائی کے امکانات کو مزید مستحکم کردیا ہے۔ جبکہ اس دوڑ میں جاپان کے کائی نشی کوری ، چیک جمہوریہ کے ٹامس برڈک اور اسپین کے ڈیوڈ فیرر بھی شامل ہیں، جن کے درمیان رواں ہفتہ کھیلے جانے والے ٹورنمنٹ کے نتائج کافی اہمیت کے حامل ہیں۔

TOPPOPULARRECENT