Tuesday , November 21 2017
Home / شہر کی خبریں / ف12 فیصد تحفظات کیلئے بیٹے اور بیٹی کے ذریعہ کے سی آر تک احساسات پہونچانے کا عزم

ف12 فیصد تحفظات کیلئے بیٹے اور بیٹی کے ذریعہ کے سی آر تک احساسات پہونچانے کا عزم

سیاست و اقامت خانہ بہادر خان نلگنڈہ کا تحفظات پر جلسہ عام ، امیر جماعت اسلامی تلنگانہ و اڑیسہ جناب حامد محمد خاں و دیگر کا خطاب
نلگنڈہ ۔ 9 ۔ نومبر : ( سیاست نیوز ) : امیر جماعت اسلامی تلنگانہ و اڑیسہ جناب حامد محمد خاں نے 12 فیصد مسلم تحفظات کے وعدے کو عملی جامہ پہنانے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ ہم ہمارے مطالبہ کو عملی شکل دینے کے لیے ضرورت پڑنے پر بیٹی اور بیٹے دونوں کی خدمات حاصل کرتے ہوئے چیف منسٹر تلنگانہ کے سی آر کو مسلمانوں کے جذبات و احساسات سے واقف کرائیں گے ۔ روزنامہ سیاست اور ادارہ اقامت خانہ بہادر خان نلگنڈہ کے زیر اہتمام 12 فیصد مسلم تحفظات کے ضمن میں ایس آر گارڈن میں منعقدہ جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے ان خیالات کا اظہار کیا ۔ جس میں ایڈیٹر سیاست جناب زاہد علی خاں ، نیوز ایڈیٹر جناب عامر علی خاں نے مہمان خصوصی کی حیثیت سے شرکت کی تھی ۔ جناب محمد شاہد احمد صدر اقامت خانہ بہادر خان نے صدارت کی ۔ دیگر مہمانوں میں حضرت مولانا سید شاہ احسان الدین قاسمی رشادی ناظم مدرسہ دارالعلوم نلگنڈہ ، مولانا مفتی امان اللہ قاسمی ناظم مدینہ العلوم مریال گوڑہ نائب صدر جمعیت العلماء نلگنڈہ مولانا بشیر قاسمی رشادی ناظم مدرسہ تنویر البنات نلگنڈہ ، مولانا مفتی صدیق احمد مظاہری ، بیورو چیف روزنامہ سیاست جناب محمد شہاب الدین ہاشمی کے علاوہ دوسرے موجود تھے ۔ جناب حامد محمد خاں نے مسلمانوں کو 12 فیصد تحفظات فراہم کرنے کے لیے حکومت پر جمہوری انداز میں دباؤ ڈالنے اور مسلمانوں میں شعور بیدار کرنے کے لیے شروع کردہ مہم کا خیر مقدم کرتے ہوئے کہا کہ اب یہ مہم تحریک میں تبدیل ہوگئی ہے ۔ جماعت اسلامی اس کی بھر پور تائید و حمایت کرتی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ٹی آر ایس کے انتخابی منشور میں جب 12 فیصد مسلم تحفظات کا وعدہ کیا گیا تو اس کو پورا کرنا چیف منسٹر تلنگانہ کی ذمہ داری ہے ۔ مسلمانوں کو بی سی طبقات میں شامل کرنے کے جو قانونی اور دستوری فرائض ہیں اس کو تکمیل کرنا تلنگانہ حکومت کی ذمہ داری ہے ۔ حکومت نے بی سی کمیشن کے بجائے سدھیر کمیشن آف انکوائری تشکیل دیتے ہوئے مسلمانوں کو مایوس کردیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ مسلمان وہی چاہتے ہیں جو کے سی آر نے وعدہ کیا ہے ۔ سدھیر کمیشن کی سفارشات سے مسلمانوں کو ریزرویشن ملنا ممکن نہیں ہے ۔ بی سی کمیشن کے بجائے چیف منسٹر نے اسمبلی میں بل کو منظور کرتے ہوئے مرکز کو روانہ کرنے کا اسمبلی میں اعلان کرتے ہوئے مسلمانوں کی بے چینی میں مزید اضافہ کردیا ہے کیوں کہ بی جے پی مسلم تحفظات کی مخالف ہے ۔ لہذا چیف منسٹر فوری بی سی کمیشن تشکیل دیتے ہوئے اپنے وعدے کو پورا کریں ۔ جناب حامد محمد خاں نے کہا کہ مسلمان اپنے حقوق کو حاصل کرنے کے لیے متحد ہیں اور اس کا سہرا ایڈیٹر سیاست جناب زاہد علی خاں کو جاتا ہے ۔ نیوز ایڈیٹر روزنامہ سیاست جناب عامر علی خاں نے کہا کہ حکومت نے وعدے کے مطابق مسلمانوں کو 12 فیصد تحفظات فراہم کئے بغیر ایک لاکھ سرکاری جائیدادوں پر تقررات کرنے کا اعلان کیا ہے اور 16 ہزار سے زائد جائیدادوں پر تقررات کے لیے اعلامیہ بھی جاری کردیا ہے ۔ اگر 12 فیصد مسلم تحفظات فراہم کرتے ہوئے تقررات کئے جائیں تو تقریبا 15 ہزار جائیدادوں پر مسلمانوں کے تقررات ہوں گے اور 280 ایم بی بی ایس نشستوں پر مسلم طلبہ کو داخلہ ملے گا جن کی ساری تعلیم صرف ڈھائی لاکھ میں مکمل ہوجائے گی ۔ انہوں نے کہا کہ مسلمانوں کے جائز حقوق کے لیے روزنامہ سیاست نے مسلم تحفظات کی تحریک شروع کی ہے ۔ حیدرآباد کے بشمول تلنگانہ کے تمام اضلاع میں مسلمانوں کی جانب سے سینکڑوں یادداشتیں سرکاری ملازمین اور منتخب عوامی نمائندوں کو پیش کی گئی ہیںہم ہمارے حقوق حاصل کرنے کے لیے جمہوری انداز میں تحریک چلاتے ہوئے جدوجہد کررہے ہیں ۔ ضرورت پڑنے  پر حقوق چھین لینے کے لیے بھی تیار رہیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ 12 فیصد مسلم تحفظات کے تعلق سے مسلمانوں میں شعور بیدار ہوچکا ہے ۔ سینکڑوں کی تعداد میں یادداشتیں پیش کرنا اس کا ثبوت ہے ۔ جناب عامر علی خاں نے تمام مسلمانوں کو اپنے صفحوں میں اتحاد پیدا کرتے ہوئے 12 فیصد مسلم تحفظات کے حصول کے لیے متحد ہوجانے پر زور دیا ۔ مولانا مفتی امان اللہ قاسمی ناظم مدرسہ مدینہ العلوم نائب صدر جمعیت العلماء نلگنڈہ نے بہار نتائج کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ جب مسلمان کسی بات کا فیصلہ کرلیتے ہیں تو اس کو نتائج میں تبدیل کردیتے ہیں ۔ کے سی آر نے 12 فیصد مسلم تحفظات کا وعدہ کیا تھا تو مسلمانوں نے تائید کی تھی اب وہ اپنے وعدے سے انحراف کررہے ہیں تو اس کا انہیں خمیازہ بھگتنے کے لیے بھی تیار رہنا پڑے گا۔ بیورو چیف روزنامہ سیاست جناب محمد شہاب الدین ہاشمی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ روزنامہ سیاست صرف ایک اخبار تک محدود نہیں ہے بلکہ ایک انجمن ہے جس کے توسط سے بے حساب فلاحی کام جن میں مسلم لاوارث نعشوں کی تدفین ، مسلم طلبہ کی اسکالر شپس کے علاوہ دیگر کاموں پر بھی روشنی ڈالی ۔ اس موقع پر محمد سلیم رکن بلدیہ نلگنڈہ اور محمد رضی الدین نے بھی خطاب کیا ۔ جلسہ کا آغاز مولانا شفاعت کی قرات کلام پاک سے ہوا ۔ نظامت کے فرائض مولانا یاسر نے انجام دئیے ۔ اس جلسہ میں اقامت خانہ بہادر خان کے معتمد ڈاکٹر ممتاز قریشی ، قاضی مسعود کلیم خازن اراکین عاملہ زاہد حسین انجینئر ، غلام جیلانی ، محمد منیر الدین افسر ، نصرت خان ، مسیح الدین واسق کے علاوہ ضلع نلگنڈہ کے مختلف مقامات سے حفاظ ، علماء ، دانشوروں ، سیاسی قائدین اور دیگر تنظیموں کے ذمہ داروں کے علاوہ عوام کی کثیر تعداد نے شرکت کی ۔ اسٹاف رپورٹر روزنامہ سیاست ضلع نلگنڈہ محمد فہیم الدین نے شکریہ ادا کیا ۔۔

TOPPOPULARRECENT