Friday , June 22 2018
Home / دنیا / قاتل سونامی کے دس سال

قاتل سونامی کے دس سال

پھوکیٹ ۔ 23 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) بحیرہ ہند میں جان لیوا عفریت یعنی سونامی کے دلدوز واقعہ جس میں لاکھوں افراد ہلاک اور کروڑہا روپئے کی املاک تباہ ہوگئی تھی، کے دس سال مکمل ہورہے ہیں جس کے بعد حکام اس بات کیلئے مجبور ہوئے کہ ایک ہائی ٹیک وارننگ سسٹم تیار کیا جائے جو مستقبل میں ایسے دلدوز واقعات کی روک تھام کرسکے۔ 26 ڈسمبر 2004ء کی صبح انڈو

پھوکیٹ ۔ 23 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) بحیرہ ہند میں جان لیوا عفریت یعنی سونامی کے دلدوز واقعہ جس میں لاکھوں افراد ہلاک اور کروڑہا روپئے کی املاک تباہ ہوگئی تھی، کے دس سال مکمل ہورہے ہیں جس کے بعد حکام اس بات کیلئے مجبور ہوئے کہ ایک ہائی ٹیک وارننگ سسٹم تیار کیا جائے جو مستقبل میں ایسے دلدوز واقعات کی روک تھام کرسکے۔ 26 ڈسمبر 2004ء کی صبح انڈونیشیا کے مغربی ساحل میں اندرون سمندر رونما ہوئے زبردست زلزلہ کا نتیجہ یہ ہوا کہ سمندر سے اٹھنے والی لہریں کئی فٹ اونچی تھیں۔ زلزلہ کی شدت 9.3 تھی اور لہروں نے وہ تباہی مچائی جس کی نظیر نہیں ملتی۔ انڈونیشیاء، سری لنکا اور صومالیہ کے علاوہ 14 دیگر ممالک میں 220,000 افراد ہلاک ہوگئے۔ مہلوکین میں ہزاروں بیرونی سیاح بھی شال تھے جو تھائی لینڈ کے ساحل سمندر پر کرسمس کی تعطیلات کے دوران جمع ہوئے تھے۔ سونامی کی دہشت زدگی کا نظارہ دنیا کے ہر ملک میں موجود لوگوں نے اپنے ٹی وی سیٹ پر بھی دیکھا۔ سونامی سے بچنے کے لئے قبل از وقت ایک وارننگ سسٹم ضرور تھا لیکن لہروں کی بلندی کو دیکھتے ہوئے عوام کے پاس اتنا وقت نہیں تھا کہ وہ لہروں سے بھی زیادہ بلند مقام تک پہنچ سکیں۔ اب جبکہ سونامی سے ہوئی تباہی کی دسویں برسی منائی جانے والی ہے جہاں ماہرین کا یہ کہنا ہیکہ اس دہشتناک دن کی یادیں معدوم ضرور ہوئی ہیں لیکن کسی بھی آفت کا سامنا کرنے کیلئے قبل از وقت تیاری کرنے کا احساس بھی پیدا ہوا ہے۔

TOPPOPULARRECENT