Monday , December 18 2017
Home / ہندوستان / قتل کیس میں شہاب الدین اور دیگر 3 ملزمین قصور وار

قتل کیس میں شہاب الدین اور دیگر 3 ملزمین قصور وار

دو لڑکوں کے اغواء کے بعد تیزاب ڈال کر مار دینے کا الزام
سیوان ۔ 9 ۔ دسمبر : ( سیاست ڈاٹ کام) : راشٹریہ جنتادل کے سابق ایم پی محمد شہاب الدین اور دیگر 3 ملزمین کو آج بہار کے ضلع سیوان میں 11 سال قبل پیش آئے دو بھائیوں کے قتل کیس میں خصوصی عدالت نے قصور وار ٹھہرایا ہے ۔ ایڈیشنل ڈسٹرکٹ جج اجئے کمار سریواستو نے مختلف دفعات بشمول قتل ، اغواء ، ثبوتوں کے ساتھ چھیڑ چھاڑ اور جھوٹی اطلاعات فراہم کرنے کے الزام میں شہاب الدین ، راجکمار شاہ ، شیخ اسلم اور عارف حسین کے خلاف فیصلہ سناتے ہوئے انہیں قصور وار قرار دیا ۔ تاہم سزا کی نوعیت اور حجم کا اعلان 11 دسمبر کو کیا جائے گا ۔ استغاثہ کے بموجب ایک شخص چندرا شیکھر پرساد کے 3 فرزندوں کا راجکماشاہ ، شیخ اسلم اور عارف حسین نے 16 اگست 2004 کو ان کے مکان گئو شالہ روڈ سے اغواء کرلیا تھا اور پرتاپ پور گاوں لے جاکر گریش اور ستیش پر تیزاب ڈال دیا جس کے باعث ان کی موت واقع ہوئی اگرچیکہ دونوں بھائیوں کی نعشیں بازیاب نہیں ہوئیں لیکن متوفیوں کی والدہ کلاوتی دیوی نے ایف آئی آر درج کرواتے ہوئے شہاب الدین کے 3 حواریوں کے خلاف اپنے فرزندوں کے قتل کا الزام عائد کیا تھا ۔ پولیس کی تحقیقات میں سابق رکن پارلیمنٹ کا نام بھی منظر عام پر آیا اور انہیں قتل کی سازش کا ملزم بنایا گیا ۔ چندر شیکھر پرساد کے تیسرے فرزند نے اس کیس میں بطور گواہ عدالت میں حاضر ہوا ۔ لیکن نامعلوم حملہ آواروں نے گذشتہ سال 16جون کو اس کا بھی قتل کردیا ۔ واضح رہے کہ شہاب الدین گذشتہ 7 سال سے سیوان سنٹرل جیل میں مقید ہیں ان کے خلاف متعدد مقدمات زیر سماعت ہیں ۔

TOPPOPULARRECENT