Sunday , November 19 2017
Home / Top Stories / قرآن مجید کا 410 سالہ قدیم ترین نسخہ

قرآن مجید کا 410 سالہ قدیم ترین نسخہ

میسور ۔ /11 اگست (سیاست ڈاٹ کام) قرآن مجید کا قدیم ترین نسخہ برآمد ہوا ہے جو سمجھا جاتا ہے کہ مغلیہ دور کا ہے ۔ میسور ڈسٹرکٹ پولیس نے 10 رکنی ٹولی کے قبضے سے یہ نسخہ برآمد کیا ۔ سپرنٹنڈنٹ پولیس ابھینو کھرے نے بتایا کہ اس ٹولی نے حیدرآباد میں نامعلوم افراد سے یہ نسخہ حاصل کیا اور وہ 5 کروڑ روپئے میں اسے فروخت کرنے کی کوشش کررہی تھی ۔ جب ہمیں ویڈیوز کی ترسیل کے ذریعہ قرآن مجید کے اس نسخہ کو فروخت کرنے کے بارے میں اطلاع ملی تو پولیس ٹیم نے خود کو خریدار کے طور پر پیش کرتے ہوئے ان تمام کو گرفتار کرلیا ۔ مشہور مورخ پروفیسر بی شیخ علی جو پریس کانفرنس میں موجود تھے بتایا کہ قرآن مجید کا یہ نسخہ مغل حکمراں اکبر کے دور کا ہے ۔ یہ 604 صفحات پر مشتمل ہے اور اسے خطاطی کا ایک شاہکار نمونہ کہا جاسکتا ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ اس نسخے کے آخری صفحہ پر تاریخ 1050 ہجری درج ہے ۔ جس سے صاف ظاہر ہے کہ یہ نسخہ 1605 ء کا ہے ۔ ہندوستان میں اس وقت مغلیہ دور تھا اور جہانگیر کے جانشین کے طور پر اکبر تخت نشین تھے ۔ پروفیسر شیخ علی نے کہا کہ تاریخ کے علاوہ آخری صفحہ پر اس وقت کی مذہبی شخصیتوںکے حق میں ایصال ثواب کا بھی ذکر ہے ۔ انہوں نے کہا کہ آج تک انہوں نے ایسا قدیم ترین نسخہ کبھی نہیں دیکھا۔

TOPPOPULARRECENT