Saturday , January 20 2018

قرآن

تم سلامت رہو! (انھیں) یہ کہا جائے گا اپنے رحیم رب کی طرف سے۔ (سورہ یسین۔۵۸)

تم سلامت رہو! (انھیں) یہ کہا جائے گا اپنے رحیم رب کی طرف سے۔ (سورہ یسین۔۵۸)
سب خوشیاں، سب راحتیں بجا، لیکن رب کریم خداوند ذوالجلال وہ محبوب حقیقی جس کو راضی کرنے کے لئے وہ عمر بھر ماہی بے آب کی طرح تڑپتے رہتے ہیں، جب وہ انھیں اپنے خطابِ جاں افروز سے نوازے گا تو اس وقت ان کی مسرت اور عزت افزائی کا انتہا ہو جائے گی۔ اس آیت کی جو تفسیر زبان رسالت مآب صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمائی ہے، وہ بھی ملاحظہ ہو:
ترجمہ:۔ حضرت جابن بن عبد اللہ رضی اللہ تعالی عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا: ’’جس وقت اہل جنت اپنی نعمتوں میں مشغول ہوں گے، اچانک اوپر سے ایک نور چمکے گا۔ جب وہ سر اٹھاکر دیکھیں گے تو انھیں معلوم ہوگا کہ ان کا رب کریم ان کی طرف جھانک رہا ہے۔ اللہ تعالی فرمائے گا: ’’اے جنتیو! السلام علیکم‘‘۔ سلامٌ قولاً من رب رحیم سے یہی مراد ہے‘‘۔
حضور اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کا ارشاد ہے کہ ’’اللہ تعالی ان کی طرف دیکھے گا اور وہ اس کی طرف دیکھتے رہیں گے۔ محویت کا یہ عالم ہوگا کہ جب وہ جمال حقیقی کا دیدار کر رہے ہوں گے، جنت کی کسی دوسری نعمت کا انھیں خیال تک ہی نہیں رہے گا۔ یہاں تک کہ حسن حقیقی پردہ فرمائے گا، لیکن اس کا نور اور اس کی برکت ان پر اور ان کے مکانوں پر ضیاء بار رہے گی‘‘۔

TOPPOPULARRECENT