Wednesday , September 26 2018
Home / شہر کی خبریں / قرضوں کی معافی کے لئے چندرابابو نائیڈو کا وعدہ گمراہ کن ، سی رام چندریا کا بیان

قرضوں کی معافی کے لئے چندرابابو نائیڈو کا وعدہ گمراہ کن ، سی رام چندریا کا بیان

حیدرآباد /15 جولائی (سیاست نیوز) قائد اپوزیشن کونسل آندھرا پردیش سی رام چندریا نے آر بی آئی کے اتفاق سے قبل قرضوں کی معافی کے معاملے میں کسانوں اور خواتین کو گمراہ کرنے کا چیف منسٹر آندھرا پردیش این چندرا بابو نائیڈو پر الزام عائد کیا۔ آج اندرا بھون میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے انھوں نے کہا کہ ریاست تقسیم کے دہانے پر تھی اور تقسیم کی صورت میں آندھرا پردیش میں مالی بحران پیدا ہونے کے اندازہ کے باوجود صرف اقتدار حاصل کرنے کے لئے مسٹر نائیڈو نے کسانوں اور ڈاکرا گروپس کی خواتین سے قرض معافی کا وعدہ کیا۔ انھوں نے کہا کہ تلنگانہ کی سب سے پہلے تائید کرنے والے مسٹر نائیڈو نے تقسیم کے بعد اپنے وعدوں کی عمل آوری میں پیش آنے والی دشواریوں کو مدنظر رکھتے ہوئے آج تقسیم ریاست پر مگرمچھ کے آنسو بہا رہے ہیں اور عوام سے کئے گئے وعدوں سے انحراف کرتے ہوئے معاشی بحران کا بہانہ بناکر کانگریس کو مورد الزام ٹھہرا رہے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ چیف منسٹر آندھرا پردیش نے آر بی آئی کے اتفاق کا اعلان کرتے ہوئے دو دن میں قرضوں کی معافی کے احکامات جاری کرنے کے اشارے دیئے تھے، جب کہ حقیقت یہ ہے کہ اب تک آر بی آئی نے اس سلسلے میں کوئی فیصلہ نہیں کیا۔ انھوں نے کہا کہ مکمل قرض، کچھ مدت کیلئے یا کتنے روپیوں تک کے قرض معاف کئے جا رہے ہیں یا نئے قرض کب معاف کئے جائیں گے؟ اس سلسلے میں کوئی وضاحت نہ کرتے ہوئے کسانوں خواتین کو الجھن میں رکھا گیا ہے۔ انھوں نے کہا کہ تلگودیشم نے عوام سے کبھی پورے نہ ہونے والے وعدے کئے ہیں، لیکن اب ان پر عمل آوری تلگودیشم حکومت کی ذمہ داری ہے، جس کے لئے کانگریس پارٹی اپوزیشن کا تعمیری رول ادا کرے گی، برسر اقتدار جماعت کے وعدوں پر عمل آوری کے لئے جمہوری انداز میں جدوجہد کرے گی اور ہر حال میں عوام کا ساتھ دے گی۔ انھوں نے کہا کہ مسٹر نائیڈو صرف بیان بازی پر اکتفا کر رہے ہیں اور دیگر جماعتوں کے قائدین کو اپنی پارٹی میں شامل کرنے پر توجہ دے رہے ہیں، تاہم عوام سے کئے گئے وعدوں پر عمل آوری کے لئے غیر سنجیدہ ہیں۔

TOPPOPULARRECENT