Saturday , November 18 2017
Home / شہر کی خبریں / قرض اسکیم کیلئے درخواستوں کی وصولی سے گریز

قرض اسکیم کیلئے درخواستوں کی وصولی سے گریز

تاریخ میں توسیع نظر انداز ، رنگاریڈی میں امیدواروں کو مشکلات
حیدرآباد۔ 7 ۔ مارچ (سیاست نیوز) اقلیتی فینانس کارپوریشن کی بینکوں سے مربوط سبسیڈی اسکیم کیلئے حکومت نے درخواستوں کے ادخال کی آخری تاریخ 15 مارچ مقرر کی ہے لیکن رنگا ریڈی ضلع کے دفاتر میں درخواستوں کی وصولی کا سلسلہ بند کردیا گیا۔ رنگا ریڈی ضلع کے سرور نگر ایم پی ڈی او آفس کے باہر ایک بورڈ چسپاں کیا گیا جس میں لکھا گیا کہ درخواستیں قبول نہیں کی جائیں گی کیونکہ نشانہ مکمل ہوچکا ہے ۔ حکومت نے اس اسکیم کیلئے ہر ضلع کا علحدہ نشانہ مقرر کیا لیکن عہدیدار مقررہ نشانہ کے مطابق درخواستیں قبول کرنے کے پابند نہیں ہیں ، انہیں داخل کی گئی تمام درخواستوں کو قبول کرنا لازمی ہے۔ سرور نگر سے تعلق رکھنے والے عوام نے ایم پی ڈی او آفس کے باہر چسپاں کئے گئے بورڈ کی تصویر سیاست کو روانہ کی ہے جس میں صاف طور پر لکھا گیا ہے کہ درخواستیں قبول نہیں کی جائیں گی۔ اس اسکیم کے تحت ریاست بھر میں 8200 افراد کو سبسیڈی فراہمی کا نشانہ مقرر کیا گیا لیکن ابھی تک ایک لاکھ 20,000 سے زائد درخواستیں داخل کردی گئی ہیں ۔ حیدرآباد اور دیگر اضلاع میں درخواستوں کی ہارڈ کاپی امیدواروں سے قبول کی جارہی ہے جبکہ رنگا ریڈی ضلع سے کئی شکایات موصول ہوئی ہیں۔ رنگا ریڈی کلکٹریٹ میں واقع اگزیکیٹیو ڈائرکٹر اقلیتی فینانس کارپوریشن کے دفتر میں ہارڈ کاپی وصول کرنے سے صاف طور پر انکار کیا جارہا ہے اور انہیں متعلقہ منڈل آفس سے رجوع ہونے کا مشورہ دیا جارہا ہے ۔ ایسے میںدرخواست گزاروں کو کافی مشکلات کا سامنا ہے ۔ حکومت نے آج تک یہ طئے نہیں کیا ہے کہ درخواست گزاروں کا انتخاب کس طرح کیا جائے گا۔ بڑی تعداد میں درخواستوں کے ادخال سے ہزاروں افراد اسکیم سے محروم ہوسکتے ہیں۔ ایسے میں حکومت کو چاہئے کہ وہ نہ صرف نشانہ میں اضافہ کرے بلکہ بجٹ میں بھی اضافہ ہو تاکہ زیادہ سے زیادہ افراد کو سبسیڈی حاصل ہوسکے۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT