Sunday , January 21 2018
Home / اضلاع کی خبریں / قرض فراہمی کے نشانہ کو جلد مکمل کرنے کی ہدایت

قرض فراہمی کے نشانہ کو جلد مکمل کرنے کی ہدایت

نظام آباد :19؍ مارچ(سیاست ڈسٹرکٹ نیوز)معاشی سال کے اختتام میں 10 یوم باقی ہے لہذا قرضہ جات کی فراہمی کیلئے مقرر کردہ نشانہ کو جلداز جلد تکمیل کریں۔ ان خیالات کا اظہار ضلع کلکٹر مسٹر رونالڈ روس آج نظام آباد کے پرگتی بھون میں بینکر س کے مشترکہ کمیٹی کے اجلاس سے مخاطب کرتے ہوئے کیا۔ ضلع کلکٹر کی صدارت میں منعقدہ بینکرس کے اجلاس کو مخا

نظام آباد :19؍ مارچ(سیاست ڈسٹرکٹ نیوز)معاشی سال کے اختتام میں 10 یوم باقی ہے لہذا قرضہ جات کی فراہمی کیلئے مقرر کردہ نشانہ کو جلداز جلد تکمیل کریں۔ ان خیالات کا اظہار ضلع کلکٹر مسٹر رونالڈ روس آج نظام آباد کے پرگتی بھون میں بینکر س کے مشترکہ کمیٹی کے اجلاس سے مخاطب کرتے ہوئے کیا۔ ضلع کلکٹر کی صدارت میں منعقدہ بینکرس کے اجلاس کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ 2014-2015کے معاشی سال میں1990.74 کروڑ روپئے کے قرضہ جات کی فراہمی کا نشانہ مقرر کیا گیا تھا ان میں سے 1987.48 کروڑ روپئے کے قرضہ جات فراہم کرتے ہوئے 99.84 فیصد قرضہ جات کی فراہمی کی گئی اور باقی نشانہ کو بھی تکمیل کرتے ہوئے مزید قرضہ جات فراہم کرنے کی ہدایت دی۔ خواتین کو قرضہ جات کی فراہمی کیلئے 373.39 کروڑ روپئے کے نشانہ میں سے 367.12 کروڑ روپئے فراہم کرتے ہوئے 6 کروڑ روپئے کے قرضہ جات کو زیر التواء رکھا گیا۔ لہذا مشترکہ طور پر جائزہ لیتے ہوئے 1440 افراد کو مختلف کارپوریشن کے ذریعہ منتخب کرتے ہوئے قرضہ جات کی فراہمی کیلئے اقدامات کریںمنتخب افراد کو قرضہ جات کی فراہمی کیلئے منظوری دیتے ہوئے اس پر جلداز جلد عمل کریں۔ وجئے بینک، کنارا بینک، یو کے بینک، ویشیا بینک و دیگر بینک قرضہ جات کی فراہمی میں سست ہے ان کو مقرر کردہ نشانہ کی تکمیل کریں تو بہتر ہوگا۔ کسانوں کو قرضہ جات کی معافی کے تحت حکومت کی جانب سے 25 فیصد ادائیگی کے بعد چند بینک کسانوں کو قرضہ جات کے رینیول کرنے میں لاپرواہی برت رہے ہیں۔ ادا کردہ قرضہ جات کے رینیول کریں یا حکومت کو واپس کریں ۔ قرضہ جات کی فراہمی میں چند بینک خاص طور سے خانگی بینک کسانوں کو مشکلات میں ڈال رہے ہیں ۔لہذا ان کھاتہ داروں کو دیگر بینکوں کو منتخب کرنے ، خود روزگار اسکیم کے کارڈ، خواتین کومتعلقہ کارپوریشن کے ذریعہ تربیت، تربیت یافتہ نوجوانوں کو قرضہ جات کی فراہمی میں تعاون کرنے، حکومت کی جانب سے متعارف کردہ اسکیمات کیلئے سبسیڈی دستیاب ہے۔اس اجلاس میں اے ڈی ایم راما کرشنا، نبارڈ اے جی ایم رمیش چندر، آر بی آئی اے جی ایم پنا ریڈی، آندھرا بینک اے جی ایم ملکارجن، آئی کے پی ڈی وینکٹیشم و دیگر عہدیدار بھی موجود تھے۔

TOPPOPULARRECENT