Monday , November 20 2017
Home / Top Stories / قطر کے توانائی شعبہ میں سرمایہ کاری سے ہندوستان کی گہری دلچسپی

قطر کے توانائی شعبہ میں سرمایہ کاری سے ہندوستان کی گہری دلچسپی

وزیر اعظم مودی کی قطری ہم منصب شیخ عبداللہ بن ناصر الخلیفہ الثانی سے بات چیت ، پانچ سمجھوتوں پر دستخط

نئی دہلی ۔ /3 ڈسمبر (سیاست ڈاٹ کام) وزیراعظم نریندر مودی نے قطر کے وزیراعظم شیخ ناصر بن خلیفہ الثانی سے آج یہاں توانائی ، سکیورٹی اور تجارت کے کلیدی موضوعات پر تبادلہ خیال کے دوران قطر میں ہائیڈرو کاربن پراجکٹس میں سرمایہ کاری سے ہندوستان کی گہری دلچسپی کا اظہار کیا ۔ قطر کے وزیراعظم ناصر جو اپنے پہلے دورہ ہند پر یہاں پہونچے ہیں ، وزیراعظم  ان کے ساتھ سکیورٹی اور دفاع کے شعبوں بالخصوص سائبر سکیورٹی میں تعاون کے فروغ پر تبادلہ خیال کیا ۔ دونوں قائدین نے دہشت گردوں کو فینانس کی فراہمی اور رقمی ہیراپھیری جیسی لعنتوں کے خلاف مشترکہ کارروائی سے اتفاق کیا ۔ مذاکرات کے بعد دونوں فریقوں نے ویزا ، سائبر اسپیس اور سرمایہ کاری کے بشمول پانچ سمجھوتوں پر دستخط کئے ۔ مودی نے کہا کہ قطر کے وزیراعظم کے اس دورہ سے قطر کے ساتھ باہمی تعلقات میں اضافہ کا اظہار ہوتا ہے ۔ ہندوستان نے قطر کو ہمیشہ ہی ایک اعلیٰ قدر کا حامل ساجھیدار سمجھا ہے ۔ دونوں قائدین نے اتفاق کیا کہ دونوں ملکوں کے مابین تجارت اور سرمایہ کاری کے موجودہ سطح اس کی اصل گنجائش اور صلاحیتوں سے بہت کم ہے ۔ وزارت امور خارجہ میں ترجمان وکاس سواروپ نے کہا کہ ہندوستان کے انفواسٹرکچر اور توانائی کے شعبوں میں قطری سرمایہ کاری کے بے پناہ موقعوں کو اجاگر کیا ۔ توانائی کے شعبہ میں تعاون پر مودی نے کہا کہ ’’ہمیں محض خریدار اور فروخت کنندہ کے تعلقات کی سطح سے اوپر اٹھتے ہوئے مشترکہ وینچرس ، مشترکہ تحقیق و ترقی اور مشترکہ کھوج ونکاسی کے شعبوں تک وسعت دینا چاہئیے ‘‘ ۔ مودی نے کہا کہ ’’ہندوستانی کمپنیاں قطر کے ہائیڈرو کاربن شعبہ میں سرمایہ کاری کے لئے تیار ہیں ۔ خلیجی علاقہ میں قطر ہندوستان کا نہ صرف انتہائی اہم تجارتی ساجھیدار سے بلکہ قدرتی گیس کا سب سے بڑا سربراہ کنندہ بھی ہے جو 2015-16 ء کے دوران ہندوستانی درآمدات میں ایل این جی کا 66 فیصد حصہ فراہم کیا ہے ۔ قطر کے وزیراعظم نے اپنے ملک میں 2022 ء کے دوران ہونے والے فیفا ورلڈ کپ مقابلوں کے پیش نظر انفراسٹرکچر اور سرمایہ کاری کے شعبوں میں ہندوستان کو شمولیت کی دعوت دی ۔ انہوں نے قطری بندرگاہوں کے شعبہ میں بھی ہندوستانی سرمایہ کاری کا خیرمقدم کیا ۔ سواروپ نے کہا کہ انہوں (مودی) نے ہندوستانی معیشت میں کشادگی پیدا کرنے اور ایف ڈی آئی کے بہترین مواقع فراہم کرنے اپنی حکومت کی طرف سے کئے گئے اقدامات کا تذکرہ کیا ۔ دونوں قائدین نے تعاون میں اضافہ کیلئے ترجیحی شعبہ کے طور پر شہری ہوابازی کی نشاندہی کی ‘‘ ۔ وزیراعظم مودی نے ہندوستان سالانہ آٹھ ملین ٹن یوریا درآمد کرتا ہے اور کہا کہ یوریا کی سربراہی کے لئے قطر کے ساتھ ہم ایک طویل مدتی سمجھوتہ کا خیرمقدم کریں گے ۔ یہ بھی مطلع کیا گیا کہ غذائی سکیورٹی کے ضمن میں ہندوستان اپنے دوست ملک قطر کی ضروریات کی تکمیل کرسکتا ہے ۔ دونوں قائدین نے بالخصوص عراق ، شام و یمن ، علاقائی صورتحال پر بھی تبادلہ خیال کیا ۔ قبل ازیں قومی سلامتی مشیر اجیت ڈوول نے قطر کے وزیراعظم سے ملاقات اور بات چیت کی ۔

TOPPOPULARRECENT