Saturday , November 18 2017
Home / جرائم و حادثات / قلعہ گولکنڈہ میں خاتون کی اراضی پر ناجائز قبضہ

قلعہ گولکنڈہ میں خاتون کی اراضی پر ناجائز قبضہ

متاثرہ خاتون کی پولیس میں شکایت ، پولیس سے موثر کارروائی کی خواہش
حیدرآباد ۔ /22 جولائی (سیاست نیوز) شہر میں لینڈ گرائبرس کی ہراسانیوں میں دن بہ دن اضافہ ہوتا جارہا ہے ۔ تاہم ان کے خلاف موٹر کارروائی نہ ہونا غیر سماجی عناصر کے حوصلہ بلندہونے کا سبب تصور کیا جارہا ہے اور ایسی ہی درخواست کمشنر پولیس حیدرآباد سے کی گئی ، منگل ہاٹ علاقہ کی ساکنان خواتین بسنتی بائی نے کمشنر پولیس سے درخواست کی ہے کہ قلعہ گولکنڈہ میں ان کی اراضی پر ناجائز قبضہ کی کوشش جاری ہے ۔ بسنتی بائی نے اپنی شکایت میں فردوس اور علیم خاں نامی دو افراد پر مبینہ الزام لگایا ہے کہ وہ غیر سماجی عناصر کی مدد سے ان کی ملکیت کو ہڑپنا چاہتے ہیں اور ان افراد پر خاتون درخواست گزار نے مزید سنگین الزامات لگاتے ہوئے کہا کہ یہ لوگ غیر قانونی طور پر ان کی ملکیت میں داخل ہونے کی کوشش کررہے اور سنگین نتائج کا انتباہ دے رہے ہیں ۔ اس خاتون درخواست گذار بسنتی بائی نے پولیس کمشنر سے موثر کارروائی اور ان کے تحفظ کی درخواست کی ہے ۔ مقامی سماجی کارکنوں نے بتایا کہ قلعہ گولکنڈہ بالخصوص گولکنڈہ پولیس حدود میں کئی مقامات پر سرکاری اراضیات پائی جاتی ہیں ۔ سرکاری عہدیداروںپر سماجی کارکنوں نے الزام لگایا کہ عہدیدار اراضی پر بورڈ لگانے میں دلچسپی تو دکھاتے ہیں جو کہ عوام نے خریدی ہے تاہم ایسی اراضیات کے تحفظ میں ناکام ہیں ۔ جہاں غیر سماجی عناصر اور سیاسی پشت پناہی والے افراد کی نظریں ہیں اور ایسے افراد کو پولیس کی مبینہ پشت پناہی حاصل ہونے کے الزامات بھی پائے جاتے ہیں ۔ سابق میں ایک عہدیدار کو ایسے ہی سنگین الزامات کا سامنا تھا ۔ گولکنڈہ کے سماجی کارکنوں نے بھی سرکاری اراضیات کے تحفظ اور انہیں عوامی مفاد کے استعمال کا مطالبہ کیا ہے ۔

TOPPOPULARRECENT