Tuesday , September 25 2018
Home / شہر کی خبریں / قلعہ گولکنڈہ پر پرچم لہرانے بی جے پی کی کوشش ناکام

قلعہ گولکنڈہ پر پرچم لہرانے بی جے پی کی کوشش ناکام

حیدرآباد۔/17ستمبر، ( سیاست نیوز) قلعہ گولکنڈہ پر آج اس وقت معمولی کشیدگی پیدا ہوگئی جب بی جے پی کے کارکنوں نے اس تاریخی یادگار کے قریب قومی پرچم لہرانے کی کوشش کی تاہم وہاں پہلے سے چوکس پولیس نے بروقت مداخلت کرتے ہوئے بی جے پی کے کارکنوں کو گرفتار کرلیا جن میں تلنگانہ ریاستی یونٹ کے صدر جی کشن ریڈی بھی شامل تھے۔ بی جے پی کارکنوں نے 17ست

حیدرآباد۔/17ستمبر، ( سیاست نیوز) قلعہ گولکنڈہ پر آج اس وقت معمولی کشیدگی پیدا ہوگئی جب بی جے پی کے کارکنوں نے اس تاریخی یادگار کے قریب قومی پرچم لہرانے کی کوشش کی تاہم وہاں پہلے سے چوکس پولیس نے بروقت مداخلت کرتے ہوئے بی جے پی کے کارکنوں کو گرفتار کرلیا جن میں تلنگانہ ریاستی یونٹ کے صدر جی کشن ریڈی بھی شامل تھے۔ بی جے پی کارکنوں نے 17ستمبر کو سرکاری طور پر یوم آزادی تلنگانہ منانے کا مطالبہ کرتے ہوئے تاریخی قلعہ گولکنڈہ پر قومی پرچم لہرانے کی کوشش کی تھی۔ بی جے پی کارکنوں نے قلعہ کے احاطہ میں زبردستی داخل ہونے کی کوشش کی لیکن پولیس نے فی الفور مداخلت کرتے ہوئے ان سب کو پکڑ کر اپنی گاڑیوں میں بٹھالیا اور قریبی پولیس اسٹیشنوں کو منتقل کردیا۔

پولیس تحویل میں لئے جانے والے بی جے پی قائدین میں نائب صدر بنڈارو دتاتریہ ایم پی، تلنگانہ اسمبلی میں بی جے پی کے فلور لیڈر ڈاکٹر لکشمن، خیریت آباد کے رکن اسمبلی سی رام چندرا ریڈی، سابق ارکان اسمبلی این اندراسین ریڈی اور این جناردھن ریڈی شامل ہیں۔ بعد ازاں بی جے پی کے ریاستی صدر دفتر پر یوم آزادی تلنگانہ منایا گیا جہاں ریاستی یونٹ کے صدر کشن ریڈی نے قومی پرچم لہرایا اور ہندوستان کے پہلے وزیر داخلہ سردار ولبھ بھائی پٹیل کے پورٹریٹ پر پھول چڑھایا۔ کشن ریڈی نے اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے کہا کہ تلنگانہ کی حکومت سرکاری طور پر یوم آزادی تلنگانہ منانے کے بجائے قلعہ گولکنڈہ پر انہیں قومی پرچم لہرانے کی اجازت دینے سے انکار کی ہے۔ چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ کی طرف سے اگر 2010کے دوران دیئے گئے ایک بیان کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ کے سی آر کو چاہیئے کہ وہ فیصلہ کرلیں کہ انہیں رضاکار چاہیئے یا تلنگانہ کے عوام چاہئے۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT