Sunday , August 19 2018
Home / اضلاع کی خبریں / قومی شاہراہ کو ویلچال بائی پاس روڈ سے لے جانے کا مطالبہ

قومی شاہراہ کو ویلچال بائی پاس روڈ سے لے جانے کا مطالبہ

کلکٹریٹ کے آگے کتیہ پلی منڈل کی عوام کا دھرنا ‘ کلکٹر کو یادداشت حوالے

کریم نگر ۔ 18 فبروری ( سیاست ڈسٹرکٹ نیوز) نیشنل ہائی وے کی تعمیر سے رہائشی مکانات سے محروم ہو کر مقیم خاندان سڑک پر آجانے کا خطرہ پیدا ہوگا ۔ قومی شاہراہ کی تعمیر موضع ویلچال بائی پاس سے لیاجانے کے لئے مطالبہ کرتے ہوئے کتہ پلی کی عوام نے ایک بڑے جلوس کی شکل میں کلکٹریٹ پہنچ کر احتجاجی دھرنا دیا ۔ رضا کارانہ طورپر کتہ پلی بند منایاگیا ۔ دوکانیں کاروبار سب بند کر دیئے اور راستہ روکو بھی منظم کیا اور کریم نگر آر ڈی او کو ایک یادداشت حوالے کی ۔اس موقع پر انہوں نے مخاطب ہوتے ہوئے کہاکہ جگتیال سے ورنگل تک زیر تعمیر قومی شاہراہ این ایچ 563 میں کتہ پلی موضع منڈل مستقر تک آنے سے قبل ویلچال کراسنگ بائی پاس روڈ کی تعمیر کی گنجائش ہے کہکر سروے کنسلٹنٹ نے و ضاحت کر دی ہے ۔ لیکن ایم پی ونود کمار کلکٹر سرفراز احمد نے کتہ پلی موضع سڑک کی توسیع نہ کی جانے آپشن اور آپشن 2 ویلجال ایکس روڈ سے بائی پاس تعمیر کی جانے کے لئے نیشنل ہائی وے اٹھاریٹی آف انڈیا کو تحریری خطوط روانہ کرنے کے باوجود اس کے علاوہ گرام پنچایتی ضلع پریشد کی قراداد کو بھی نظر انداز کرتے ہوئے نیشنل ہائی اتھاریٹی عہدیدار اپنی مرضی کے مطابق ہمارے اس گاوں کتہ پلی میں سڑک کی توسیع کی جائے اس سلسلے میں 3 فبروری کو اعلامیہ نوٹیفکیشن میں جاری کر دیا ہے ۔ اس کی وجہ سے مقامی افراد انتہائی پریشان اور برہم ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ ہمارے جائز مطالبہ پر غور کرتے ہوئے کلکٹر اور ایم پی کے سفارشی خطوط پنچایت ضلع پریشد اجلاس کی قرارداد کے مطابق سڑک توسیع کا پروگرام ترک کردیں اورر ویلچال کراس روڈ سے بائی پاس روڈ کی تعمیر کرلی جائے کہکر انہوں نے مطالبہ کیا ۔ اس موقع پر زیڈ پی مددگار کوآپشن ممبرز محمد جمیل الدین نے مخاطب ہوتے ہوئے کہا قومی شاہراہ ہمارے گاوں کے بازو سے جاری ہے اس میں گاؤں کے قریب 300 مکانات ‘ شاپس کی عمارتیں اور منادر چرج منہدم ہوجائیں گے اورمحفوظ پینے کے پانی کا سنٹر بھی تباہ ہوجائیگا اس کا خدشہ ہے کہ اس پور غور کرنے کی ضرورت ہے ۔

TOPPOPULARRECENT