Tuesday , December 12 2017
Home / شہر کی خبریں / قوم سکیوریٹی فورسیس کی تائید کرے دہشت گردوں کی نہیں

قوم سکیوریٹی فورسیس کی تائید کرے دہشت گردوں کی نہیں

پاکستان کے ساتھ صرف مقبوضہ کشمیر ہی مسئلہ ۔ بی جے پی جنرل سکریٹری رام مادھو کا بیان
حیدراباد 24 جولائی ( پی ٹی آئی ) ملک کو چاہئے کہ وہ سکیوریٹی فورسیس کا ساتھ دیں نہ کہ دہشت گردوں کا ۔ بی جے پی جنرل سکریٹری رام مادھو نے آج یہ بات کہی جبکہ وادی کشمیر میںحزب المجاہدین کے کمانڈر برہان وانی کی ہلاکت کے بعد سے تشدد کا سلسلہ چل رہا ہے جس میں 46 افراد اب تک اپنی جان گنوا بیٹھے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ 1994 میںایک متفقہ قرار داد پارلیمنٹ میں منظور ہوئی تھی کہ ہندوستان اور پاکستان کے مابین واحد متنازعہ مسئلہ مقبوضہ کشمیر کا ہے ۔ ہم اپنی بی جے پی ۔ پی ڈی پی حکومت سے کہتے ہیں کہ جب بات ہندوستان اور پاکستان کی آتی ہے تو اس کا کوئی رول نہیں ہوتا ہے ۔ اس مسئلہ سے حکومت ہند نمٹے گی ۔ ہم سب کو یہ سمجھنے کی ضرورت ہے ک ہمارا متنازعہ مسئلہ کشمیر نہیں ہے ۔ یہ ہمارا ہے ۔ جب وہ یہ کہتے ہیں کہ یہ ہمارا ہے تو یہ صرف جغرافیائی اعتبار سے نہیں ہے بلکہ آبادی کے اعتبار سے بھی ہے ۔ جب وہ یہ کہتے ہیں کہ کشمیر ہمارا ہے تو کشمیر کے عوام بھی ہمارے ہیں۔ یہ پیام بہت واضح ہوجانا چاہئے ۔ انہوں نے کہا کہ اگر آج کچھ نوجوان غلط راہ پر ہیں تو ہم انہیں سیدھی راہ پر لے آئیں گے ۔ ہم میں یقین رکھئے ۔ مقبوضہ کشمیر کے عوام بھی ہمارے ہیں۔ ہم کو وہ حاصل کرنا ہے ۔ لیکن ہمارا مسئلہ یہ ہے کہ میڈیا اسٹوڈیوز ( ٹی وی چینلس ) میں وانی ہمارا آدمی ہوتا ہے ریاست کے امن پسند عوام نہیں۔ کچھ لوگ ہوسکتا ہے کہ پرتشدد رویہ اختیارکرتے ہوں لیکن اکثریت امن پسند عوام کی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ وانی کے خلاف 14 فوجداری مقدمات ھتے جن میں فوج ‘ پولیس پر حملہ ‘ کانسٹیبل کا قتل بھی شامل تھے ۔ یہ سب سنگین مقدمات ہیں۔ وہ دہشت گرد تھا اور اس کے سر پر دس لاکھ روپئے کا انعام تھا ۔ انہوں نے کہا کہ ہمارے ارکان پارلیمنٹ کہتے ہیں کہ اسے پکڑا جاناچاہئے تھا گرفتار کیا جانا چاہئے تھا ۔ کیا انکاؤنٹر کے دوران جب گولیوں کی بوچھار ہو رہی ہو آپ یہ جائزہ لے سکتے ہیں کہ سامنے کون ہے ؟ ۔ اسے گرفتار کرنے جو ہمارے سپاہی ‘ فوجی ‘ پولیس اہلکار اور نیم فوجی اہلکار گئے تھے وہ صرف یہ جانتے ہیں کہ دہشت گرد کے خلاف کیا رویہ اختیار کرنا چاہئے ۔ ملک کو سکیوریٹی فورسیس کی حمایت کرنی چاہئے دہشت گردوں کی نہیں۔ مادھو نے مزید کہا کہ وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ جموں و کشمیر میں کیمپ کئے ہوئے ہیں اور وہاں قیام امن کیلئے تبادلہ خیال میں مصروف ہیں۔ جموں و کشمیر میں 9 جولائی سے عام زندگی مفلوج ہوکر رہ گئی ہے جبکہ ایک دن قبل انکاؤنٹر میں برہان وانی کو ہلاک کیا گیا تھا ۔ احتجاجیوں اور سکیوریٹی فورسیس کے مابین جھڑپوں میں اب تک 46 افراد ہلاک اور 3,400 زخمی ہوگئے ہیں۔

TOPPOPULARRECENT