Tuesday , December 12 2017
Home / شہر کی خبریں / قوم کی پسماندگی کو ختم کرنے تعلیم کو عام کرنے پر زور

قوم کی پسماندگی کو ختم کرنے تعلیم کو عام کرنے پر زور

خاک طیبہ ٹرسٹ کی سلور جوبلی تقریب، سلائی مشینوں کی تقسیم، اے کے خان و دیگر کا خطاب
حیدرآباد۔6اگست(سیاست نیوز) کسی بھی قوم کی پسماندگی کو دور کرنے کے لئے اس قوم میںعلم وتعلیم کو عام کرنا نہایت ضروری ہے ۔ تعلیم سے محروم قومیں نہ صرف پسماندگی کاشکار ہوتی ہیںبلکہ تاریخ بھی ایسے قوموں کو بھلا دیتی ہے ۔ تعلیمی اور معاشی پسماندگی کاشکار اقوام میں علم وتعلیم کو عام کرنے اور انہیںہنر مند بنانے میں سیول سوسائٹیز بھی کافی اہمیت کی حامل ہوتی ہے ۔ سیول سوسائٹیز کے اشتراک سے قوموں کی تعلیمی او رمعاشی پسماندگی دور کرنے کے موثر اقدامات اٹھائے جاسکتے ہیں۔ خاک طیبہ ٹرسٹ کی سلور جوبلی تقریب کے موقع پر محکمہ اقلیتی مالیاتی کارپوریشن کے مالی تعاون سے خواتین میںسلائی مشینوں کی تقسیم کے ضمن میںمنعقدہ پروگرام سے خطاب کے دوران ڈائرکٹر جنرل آف اینٹی کرپشن جناب اے کے خان ان خیالات کا اظہار کررہے تھے۔ایم ڈی میناریٹی فینانس کارپوریشن حکومت تلنگانہ‘ جناب شفیع اللہ آئی ایف ایس کے علاوہ ٹرسٹیز خاک طیبہ ٹرسٹ خواجہ وقار الدین‘ عظیم الدین قریشی‘شرف الدین انور‘ڈاکٹر محمد حبیب اللہ ‘کے علاوہ ٹرسٹ کے دیگر ممبران نے بھی تقریب سے خطاب کیا۔ محدث دکن اسکول مصری گنج میںمنعقد ہ اس تقریب سے خطاب کرتے ہوئے جناب اے کے خان نے کہاکہ حکومت تلنگانہ سیول سوسائٹیز کے اشتراک سے تلنگانہ کے اقلیتی طبقات میںتعلیم کے متعلق شعور بیداری مہم چلارہی ہے ۔ انہوں نے کہاکہ قوموں کا عروج وزوال علم وتعلیم پر منحصرہے ۔انہوں نے مزیدکہاکہ اقلیتوں میںعلم وتعلیم کو عام کرنے کی غرض سے حکومت تلنگانہ نے اقامتی اسکولس کے قیام کا فیصلہ کیاہے ۔ انہوں نے کہاکہ 102کے منجملہ 71اقامتی اسکولس کا پہلا مرحلے میںآغازکیاجارہا ہے جس کے لئے اراضیات کی نشاندہی کا عمل جاری ہے اس کے علاوہ ان اقامتی اسکولس میںمعیاری تعلیم اور رہائش کے بہتر مواقع فراہم کرنے کا کام کیاجارہا ہے ۔ جناب اے کے خان نے کہاکہ حکومت کی جانب سے اقلیتوں کی فلاح وبہبود کے لئے موثر بجٹ کے اعلان کے باوجود بجٹ کا نصف حصہ خرچ کیاجانا ایک قابلِ افسوس اقدام ہے ۔ جناب اے کے خان نے تعلیم کے علاوہ روزگار سے جوڑنے والے تربیتی کورسس کا بھی محکمہ اقلیتی بہبود کی جانب سے انتظام کرنے کا وعدہ کیا او رکہاکہ ہمارا مقصد ہے کہ ریاست تلنگانہ میںاقلیتی طبقے کے لوگ ایک بہتر اورباوقار زندگی گذار سکیں اس کے لئے ہمار ی جانب سے ہر ممکن کوشش کی جائے گی۔ جناب اے کے خان نے ٹرسٹ کے ذمہ داران کو مبارکباد پیش کرے گا اور 14 سال قبل میںنے قلعہ گولکنڈہ میںخاک طیبہ ٹرسٹ کے سنٹرکا افتتاح انجام دیا تھا جہا ںپر مفت طبی سہولتوں کے ساتھ ٹیلرنگ اور دیگر کاموں کی مفت تربیت دی جارہی تھی ۔ انہوں نے مزیدکہاکہ اب پچیس ویں سالگرہ کے موقع پر پھر ایک مرتبہ مجھے خاک طیبہ ٹرسٹ کے پروگرام میںشرکت کا موقع ملا ہے ۔ٹرسٹ کی جانب سے انجام دئے جانے والے فلاحی کام قابلِ تحسین ہیں۔ جناب اے کے خان نے کہاکہ ٹرسٹ سے مفت تربیت حاصل کرنے کے بعد ٹیلرنگ میںمہارت حاصل کرنے والی خواتین کو روزگار کے مواقع فراہم کرنے کے متعلق بھی سنجیدگی کے ساتھ غور کیاجائے گا اور اس ضمن میںمحکمہ اقلیتی بہبود کی جانب سے پچیس تا تیس لاکھ روپیوں کی لاگت سے کمیونٹی پراڈکٹ سنٹر قائم کرنے کی کوشش کی جائے گی اس کے علاوہ اقامتی اسکولس میں یونیفارم کی تیاری کے لئے ٹنڈرس حاصل کرنے والی کمپنیوں کو یونیفارم کی سلائی کے لئے ٹرسٹ سے رجوع ہونے کی تجویز پیش کی جائے گی۔ جناب اے کے خان نے محدث دکن ہائی اسکول کو انٹرمیڈیٹ کا درجہ فراہم کرنے کے متعلق محکمہ تعلیم کے ذمہ داران سے بات کرنے کا وعدہ کیا۔ پرانے شہر میںسودی لعنت کو ختم کرنے کے لئے آسان طریقہ کار پر چھوٹی او ر گھریلوصنعت کے لئے ایک تا دس لاکھ روپئے کے قرض کی اجرائی عمل میںلائی جائے گی۔ جناب شفیع اللہ آئی ایف ایس نے معاشی پسماندگی کی وجہہ سے مسلم خواتین کا بے راہروی کا شکار ہونے کے واقعات پر شدید افسوس کا اظہار کیا۔ جناب شفیع اللہ نے کہاکہ پرانے شہر میںمعاشی اور تعلیمی پسماندگی کاشکار مسلم خاندانوں کی بازآبادری ضروری ہے ۔ انہوں نے کہاکہ پسماندگی کاشکار اقلیتی خاندانوں کی نشاندہی کے لئے این جی اوز کا سرگرم رول ضروری ہے ۔ انہوں نے خاک طیبہ ٹرسٹ کے فلاحی کاموں کی ستائش کرتے ہوئے کہاکہ تعلیم اور مفت تربیت کے ساتھ روزگار کی فراہمی اقلیتوں کی تعلیمی اور معاشی پسماندگی کو دور کرنے کا بہترین ذریعہ ثابت ہوگی۔ اس موقع پر ٹرسٹیز کی جانب سے خاک طیبہ کی پچیس سالہ کارکردگی اور کریم نگر سنٹر پر دئے جانے والے فلاحی کاموں کی تفصیلات بھی پیش کی گئی ۔ خاک طیبہ ٹرسٹ کے زیر اہتمام مفت ٹیلرنگ کی تربیت کے بعد ٹیلرنگ کے ہنر میںمہارت حاصل کرنے والی بیس سے زائد خواتین کی جناب اے کے خان کے ہاتھوں آٹومیٹک سلائی مشینوں کی تقسیم بھی عمل میںلائی گئی۔جناب غلام یزدانی ایڈوکیٹ مینجنگ ٹرسٹی خاک طیبہ ٹرسٹ کے شکریہ پر تقریب کا اختتام عمل میںآیا۔

TOPPOPULARRECENT