Thursday , November 15 2018
Home / Top Stories / قونصل خانہ میں سعودی پرنس کے شناسا شخص کی موجودگی پر سوال

قونصل خانہ میں سعودی پرنس کے شناسا شخص کی موجودگی پر سوال

استنبول ۔ 18ا کٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) ایک شخص جو سابق میں سعودی ولیعہد محمد بن سلمان کے قافلہ برائے امریکہ کے ساتھ سفر کرچکا ہے، وہ استنبول میں واقع سعودی قونصل خانہ میں عین اس واقعہ سے قبل داخل ہوا جب جرنلسٹ جمال خشوگی وہاں سے غائب ہوگئے، ایک موافق حکومت ترک اخبار کے آج شائع کردہ تصویروں سے یہ بات واضح ہوئی ہے۔ اخبار صباح کی رپورٹ میں دکھایا گیا کہ وہ شخص بھی سعودی قونصل جنرل کی رہائش گاہ کے باہر بھی موجود تھا۔ اسے ترکی کی ایک ہوٹل سے تخلیہ کرتے ہوئے بھی پایا گیا جبکہ اس کے ساتھ ایک بڑا سوٹ کیس تھا اور وہ 2 اکٹوبر کو ترکی سے روانہ ہوگیا۔ یہ رپورٹ ایسے وقت شائع ہوئی ہے جبکہ ترک تحقیقات کاروں نے قونصل جنرل کی قیامگاہ اور قونصل خانہ دونوں جگہ رات بھر تلاشی اور تحقیقات کا کام کیا۔ انقرہ حکومت کو اندیشہ ہیکہ سعودی حکام نے خشوگی کو ہلاک کیا اور استنبول کے سفارتی مشن کے اندرون ہی اسے ٹھکانے لگا دیا گیا۔ سعودی عرب جس نے ابتداء میں ان الزامات کو بے بنیاد بتایا، حالیہ دنوں کی تبدیلیوں اور بالخصوص جمعرات کی اشاعت کے بارے میں نیوز ایجنسی دی اسوسی ایٹیڈ پریس سے بار بار درخواستوں کے باوجود کوئی ردعمل ظاہر نہیںکیا ہے۔ اخبار صباح کی رپورٹ میں دکھایا گیا کہ وہ شخص جس کے پیچھے کئی آدمی چل رہے تھے، صبح 9:55 بجے قونصل خانہ میں کھڑی پولیس رکاوٹوں سے گذرتے ہوئے جارہا تھا۔ خشوگی قونصل خانہ کو بس چند گھنٹوں قبل پہنچا۔ یہاں تک کہ 1:14 بجے خشوگی غائب ہوگیا جبکہ اس کی منگیتر باہر اس کا انتظار کرتی رہی۔ چہارشنبہ کو ایک اور موافق حکومت اخبار ینی سفاک کی رپورٹ میں خشوگی کو قتل کرنے کی آڈیو ریکارڈنگ موجود ہونے کا دعویٰ کیا گیا تھا۔
امریکہ خشوگی کیس میں نہایت سنجیدہ
دریں اثناء واشنگٹن سے موصولہ اطلاع کے بموجب امریکہ سعودی جرنلسٹ جمال خشوگی کے لاپتہ ہوجانے کے معاملہ پر نہایت سنجیدہ ہے، وزیرخارجہ مائیک پومپیو نے جمعرات کو یہ بات کہی اور مزید یہ کہ اسی طرح سعودی عرب بھی سنجیدہ ہے جس کی قیادت نے یقین دلایا ہیکہ عاجلانہ طور پر عمل کرتے ہوئے مکمل اور جامع تحقیقات کی جائیں گی۔ پومپیو نے اس مسئلہ پر صدر ڈونالڈ ٹرمپ کو بریفنگ دی ہے۔

خشوگی معاملہ ، فرانس و برطانیہ کی سعودی کانفرنس میں عدم شرکت
پیرس ؍ استنبول ۔ 18 اکٹوبر (سیاست ڈاٹ کام) فرانس کے وزیرمعاشیات برونولی مائر نے آج ایک اہم بیان دیتے ہوئے کہا کہ وہ سعودی عرب میں منعقد شدنی ایک اہم سرمایہ کاری کانفرنس میں سعودی صحافی جمال خشوگی کے لاپتہ ہونے کے بعد پیدا ہونے والے حالات کو مدنظر رکھتے ہوئے شرکت نہیں کریں گے۔ اسی طرح برطانیہ کے وزیرتجارت نے بھی سعودی کانفرنس سے دستبرداری اختیار کرلی ہے۔ انٹرنیشنل ٹریڈ سکریٹری لیام فاکس اعلیٰ سطح کے مغربی عہدیداروں میں تازہ ترین ہیں جنہوں نے ریاض میں آئندہ ہفتہ کی سمٹ سے دستبرداری اختیار کرلی ہے۔

Top Stories

TOPPOPULARRECENT