Friday , June 22 2018
Home / جرائم و حادثات / لاریوں کا سرقہ کرنے والی ٹولی گرفتار

لاریوں کا سرقہ کرنے والی ٹولی گرفتار

حیدرآباد /25 نومبر ( سیاست نیوز ) سڑکوں پر پارک کی ہوئی لاریوں کا سرقہ کرنے والی ایک بدنام زمانہ ٹولی کو سائبرآباد پولیس نے گرفتار کرلیا ۔ رات کے وقت یہ ٹولی سڑک کے کنارے پارک کردہ لاریوں کا سرقہ کیا کرتی تھی اور گذشتہ تین سالوں کے دوران اس ٹولی نے کل 81 بڑی لاریوں کا سرقہ کرلیا ۔ سائبرآباد پولیس کمشنر مسٹر سی وی آنند نے ایک پریس کانفرنس

حیدرآباد /25 نومبر ( سیاست نیوز ) سڑکوں پر پارک کی ہوئی لاریوں کا سرقہ کرنے والی ایک بدنام زمانہ ٹولی کو سائبرآباد پولیس نے گرفتار کرلیا ۔ رات کے وقت یہ ٹولی سڑک کے کنارے پارک کردہ لاریوں کا سرقہ کیا کرتی تھی اور گذشتہ تین سالوں کے دوران اس ٹولی نے کل 81 بڑی لاریوں کا سرقہ کرلیا ۔ سائبرآباد پولیس کمشنر مسٹر سی وی آنند نے ایک پریس کانفرنس کے دوران بتایا کہ سائبرآباد پولیس نے حادثات کی روک تھام اور تدارک کیلئے فرسٹ رسپانڈر سسٹم جو پٹرولنگ گاڑیوں کے ذریعہ شروع کیا گھا تھا ۔ اس کے ذریعہ یہ اہم کامیابی حاصل کی اور کل 10 افراد کو گرفتار کرلیا جبکہ اس ٹولی کے دیگر 3 افراد مفرور بتائے گئے ہیں ۔ پولیس نے بتایا کہ مسروقہ سامان کو خریدنے والے افراد کو بھی پولیس نے گرفتار کرلیا ہے ۔ پولیس نے بتایا کہ 53 سالہ محمد ایوب عرف بابا ایوب ساکن قطب الدین گورہ 28 سالہ محمد انو خان ساکن یاقوت پورہ 30 سالہ سید اختر ساکن غوث نگر ( مفرور ) 28 سالہ بابا خان ساکن جہاں نما شمع ٹاکیز ( مفرور ) 26 سالہ ایوب علی خان ساکن وٹے پلی 24 سالہ معراج خان ساکن مرتضی چمن یاقوت پورہ 32 سالہ محمد پاشاہ ساکن بہادرپورہ ( مفرور ) 20 سالہ شیخ فیاض ساکن تالاب کٹہ 35 سالہ محمد رفیق ساکن کشن باغ 26 سید عبدالعزیز کاماٹی پورہ 35 سالہ حسین خان ساکن مغل پورہ 53 سالہ پرکاش گونیکا ساکن من کنڈہ اور 25 سالہ محمد انور ساکن کشن باغ کو گرفتار کرلیا ہے ۔ کمشنر پولیس سائبرآباد نے بتایا کہ ٹولی پہلے مویشوں کا سرقہ کرتے تھے اس سلسلہ میں کئی مرتبہ پولیس نے ان کے خلاف کارروائی کرتے ہوئے انہیں جیل منتقل کیا تھا ۔ تاہم سال 2012 میں ٹولی کے اہم سرغنہ ایوب نے اپنا طریقہ کار تبدیل کردیا اور ٹولی کے ذریعہ پارک کی ہوئی گاڑیوں کو نشانہ بنانے لگے ۔ رات کے وقت یہ ٹولی اپنی انوا کار میں چندرائن گٹہ سے نکل کر سڑک کے کنارے پارک کی ہوئی لاریوں کو نشانہ بناتے تھے اور ایسی لاری جس میں کوئی نہیں ہوتا سکرو ڈرائیور کی مدد سے این ٹیکنک استعمال کرتے ہوئے لاری لیکر فرار ہوجاتے اور غوث نگر کے علاقہ میں واقعہ گیراج پہونچ کر لاری کے اہم استعمال میں آنے والی ا شیاء ٹائروں بیاٹری ڈائنما کو نکال لیتے اور گیس کٹر کی مدد سے لاری کے چھوٹے چھوٹے ٹکڑے کرتے ہوئے اور ایک پرائیویٹ لمیٹیڈ کمپنی شادنگر میں پرکاش گونیکا کو فروخت کردیتے ۔ بیاٹری کشن باغ کے انور کو فروخت کی جاتی اور چندرائن گٹہ علاقہ سے تعلق رکھنے والے حسین کو ٹائرس فروخت کردیتے ۔ اس کے علاوہ وجئے راٹھی نامی شخص جو وجئے راٹھی اینرجی ڈیوائنر فیاکٹری چلاتا ہے اور انڈسٹریل اسٹیٹ بہادرپورہ میں اس شخص کو انجن کی اشیاء فروخت کرتے تھے ۔ کمشنر پولیس نے بتایا کہ اس ٹولی نے کل 81 لاریوں کا سرقہ کیا جس میں 41 ٹپر 37 لاریاں ، تین ٹینکرس شامل ہیں ۔ اس ٹولی نے سال 2012 میں 2 سال 2013 میں 23 اور سال 2014 میں 53 لاریوں کا سرقہ کرلیا ۔ جن کی مالیت ایک کروڑ روپئے سے زیادہ ہے ۔ پولیس کمشنر نے بتایا کہ ایک کرور 14 لاکھ کی بہ نسبت ایک کروڑ ایک لاکھ روپئے ضبط کرلئے گئے ۔

TOPPOPULARRECENT