Sunday , December 17 2017
Home / Top Stories / لالو کے خلاف دھاوے، مرکز کی انتقامی کارروائی: راشٹریہ جنتا دل

لالو کے خلاف دھاوے، مرکز کی انتقامی کارروائی: راشٹریہ جنتا دل

پٹنہ۔7 جولائی (سیاست ڈاٹ کام) سی بی آئی نے لالو پرساد یادو اور ان کے خاندان کے خلاف مرکز کی ’’انتقامی‘‘ کارروائی کے طور پر دھاوے کیئے ہیں تاکہ اپوزیشن کی آواز کو کچلا جاسکے۔ راشٹریہ جنتادل نے مرکز پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ بی جے پی کے دفتر کے باہر گڑبڑ کے اندیشے کے تحت پولیس انتظامات میں شدت پیدا کردی گئی ہے۔ پوری ریاست میں دھاوئوں کے بعد عام چوکسی اختیار کرلی گئی ہے۔ دھاوئوں کے بعد 7 بجے صبح سے 12 مقامات پر پٹنہ، رانچی، بھوبنیشور اور گڑگائوں میں احتجاج کیا گیا۔ ایڈیشنل ڈائرکٹر جنرل ایس کے سنگھل نے کہا کہ لالو پرساد کے اطراف پھندا سخت کیا جارہا ہے۔ قبل ازیں انہوں نے دیش بچائو بی جے پی ہٹائو جلسہ عام 27 اگست کو پٹنہ میں منعقد کرنے کا اعلان کیا تھا۔ صدر بہار آر جے ڈی رام چندر پربے نے کہا کہ سی بی آئی کی کارروائی مرکزی حکومت کی ایما پر کی گئی ہے۔ یہ مرکز کی انتقامی کارروائی ہے جس میں ان افراد کو نشانہ بنایا جارہا ہے جو جمہوری اقدار کا تحفظ کرنا چاہتے ہیں۔ آر جے ڈی نے کہا کہ پروگرام کے مطابق 27 اگست کو پٹنہ میں جلسہ عام منعقد کیا جائے گا۔ بہار آر جے ڈی کے صدر اور ترجمان شکتی سنگھ یادو نے انہی خیالات کا اعادہ کیا۔ سی بی آئی نے رابڑی دیوی کی قیام گاہ 10 سرکولر روڈ پٹنہ پر آج صبح دھاوا کیا اور کرپشن کے ایک مقدمے میں تلاشی لی۔ الزام عائد کیا گیا ہے کہ یادو نے بحیثیت وزیر ریلوے 2 ریلوے ہوٹلس کا انتظام ایک خانگی کمپنی کے حوالے کردیا تھا اور اس کے معاوضے کے طور پر رشوت خوری کی تھی۔ بے نامی کمپنی کے نام 3 ایکڑ اراضی بھی مختص کی گئی تھی۔ لالو پرساد رانچی میں ہیں، تاکہ سی بی آئی کی عدالت کے اجلاس پر کئی کروڑ روپئے کے چارا اسکام کے سلسلہ میں حاضری دے سکیں۔ چیف منسٹر نتیش کمار صحت کی وجوہات پر کل راجگیر روانہ ہوگئے۔ چیف سکریٹری اور ریاستی پولیس سربراہ کو انہوں نے راجگیر طلب کرلیا۔ بی جے پی کے سینئر قائد سشیل کمار مودی نے چیف منسٹر نتیش کمار کی سی بی آئی دھاوئوں کے بارے میں خاموشی کو قابل اعتراض قرار دیا۔ صدر ریاستی بی جے پی نتیانند رائے کے بموجب انتظامیہ نے آر جے ڈی کارکنوں کے خلاف وحشیانہ کارروائی اور پارٹی قائد کے خلاف سی بی آئی کے دھاوے انتقامی کارروائی کے طور پر نہیں کیئے۔ مرکزی وزیر وینکیا نائیڈو نے مرکز کی جانب سے سی بی آئی کو یادو خاندان کے خلاف دھاوے کرنے کی ہدایت دینے کی تردید کی۔ نئی دہلی سے موصولہ اطلاع کے بموجب سی بی آئی نے آج سابق وزیر ریلوے لالو پرساد یادو ان کے ارکان خاندان بشمول ان کے فرزند ڈپٹی چیف منسٹر بہار تیجسوی یادو کے خلاف کرپشن کے مقدمے درج کرتے ہوئے 12 مقامات پر دھاوے کیئے اور تلاشی لی۔
تلاشی مہم کا آغاز صبح 7 بجے ہوا۔ مجرمانہ سازش، دھوکہ دہی کے الزامات کے تحت قانون تعزیرات ہند اور کرپشن کے مقدمات درج کیئے گئے ہیں۔ اس کارروائی کے دوران الزامات عائد کیئے گئے کہ ٹینڈر کے طریقہ کار میں بھی دھاندلیاں کی گئی ہیں تاکہ ایک خانگی فریق (سجاتا ہوٹل) کو غیر مستحقہ فائدہ پہنچایا جاسکے۔ یادو خاندان نے بہت کم قیمت پر 3 ایکڑ اراضی 2010تا 2014ء کے درمیان اس خانگی کمپنی کے لیے مختص کردی تھی۔ 5 جولائی کو ابتدائی تحقیقات کے بعد اس سلسلہ میں بھی ایک مقدمہ درج کیا گیا ہے۔ سی بی آئی نے 69 سالہ لالو یادو ، ان کی بیوی رابڑی دیوی، فرزند تیجسوی یادو اور پریم چند گپتا کی اہلیہ سرلا کے خلاف بھی مقدمے درج کیئے ہیں۔

 

TOPPOPULARRECENT