Thursday , November 23 2017
Home / ہندوستان / لاہور کے جیل میں ہندوستانی قیدی کی موت

لاہور کے جیل میں ہندوستانی قیدی کی موت

نعش کی منتقلی کیلئے انتظامات کرنے ہائی کمشنر کو ہدایت
نئی دہلی ۔ 13 ۔ اپریل : ( سیاست ڈاٹ کام ) : ہندوستان نے آج اسلام آباد میں متعین اپنے کارگذار ہائی کمشنر کو یہ ہدایت دی ہے کہ وہاں کی ایک جیل میں مشتبہ حالت میں ایک ہندوستانی کی موت کے سلسلہ میں تفصیلات حاصل کرے گا ۔ جلد از جلد متوفی کرپال سنگھ کی نعش ہندوستان روانہ کرنے کے انتظامات کئے جائیں گے ۔ یہ ہندوستانی قیدی لاہور کی ایک جیل کی کوٹھری میں مردہ پایا گیا ۔ وہ گذشتہ 20 سال سے سلسلہ وار بم دھماکوں کے کیس میں قید و بند کی زندگی گذار رہا تھا ۔ وزارت خارجہ کے ترجمان وکاس سروپ نے بتایا کہ کرپال سنگھ کے معاملہ پر اسلام آباد میں متعین ہمارے کارگذار ہائی کمشنر سے کہا گیا کہ پاکستانی فارن آفس سے رجوع ہو کر نعش کی منتقلی کے لیے اقدامات کرے جب کہ موت کی وجوہات اور پوسٹ مارٹم رپورٹ بھی طلب کی جائے گی ۔ 50 سالہ کرپال سنگھ جاسوسی کے الزام میں گذشتہ 25 سال سے پاکستانی جیل میں سزاء کاٹ رہا ہے اور پیر کی صبح اپنے سیل میں مشتبہ حالت میں مردہ پایا گیا تھا ۔ بتایا جاتا ہے کہ کرپال سنگھ کو 1992 میں واگھا سرحد پار کر کے پاکستان میں داخل ہونے پر گرفتار کرلیا گیا تھا اور پاکستانی صوبہ پنجاب میں سلسلہ وار بم دھماکوں کے کیس میں انہیں سزائے موت دی گئی تھی ۔ گرداسپور کے متوطن کرپال کو لاہور ہائی کورٹ نے بم دھماکوں کے الزامات سے بری کردیا گیا لیکن نامعلوم وجوہات کی بناء سزائے موت کو کالعدم نہیں کیا گیا ۔ قبل ازیں کرپال کی بہن جاگیر کور نے کہا تھا کہ معاشی تنگدستی کے باعث ان کی رہائی کے لیے آواز بلند نہیں کی جاسکی اور ان کی رہائی کے لیے کسی سیاستدان نے بھی تعاون نہیں کیا ۔

TOPPOPULARRECENT