Friday , November 24 2017
Home / Top Stories / لا کمیشن آف انڈیا کا جواب دینے مجلس کا فیصلہ

لا کمیشن آف انڈیا کا جواب دینے مجلس کا فیصلہ

یکساں سیول کوڈ کو صرف مسلمانوں کی نظر سے نہیں دیکھا جانا چاہئے : اسد اویسی
حیدرآباد۔13اکٹوبر (سیاست نیوز) مجلس اتحاد المسلمین لاء کمیشن آف انڈیا کی جانب سے جاری کردہ سوالنامہ کا جواب دے گی۔ صدر مجلس اسد الدین اویسی نے آج اعلان کیا ان کی جماعت نے فیصلہ کیاہے کہ لاء کمیشن آف انڈیا کے جاری کردہ سوالنامہ کا ضرور جواب دیا جائے گا۔ انہوں نے یکساں سیول کوڈ کی مخالفت کرنے کا بھی اعلان کیا ہے لیکن کہا کہ ان کی جماعت نے فیصلہ لیا ہے کہ ان کی جماعت لاء کمیشن آف انڈیا کے سوالنامہ کا جواب دے گی اور اس کا جواب تیار کیا جار ہا ہے۔ واضح رہے کہ مسلم پرسنل لاء بورڈ نے لاء کمیشن آف انڈیا کے سوالنامہ کو گنجلک اور گمراہ کن قرار دیتے ہوئے اس کا بائیکاٹ کرنے کا اعلان کیا ہے۔ اسد الدین اویسی خود بھی آل پرسنل لاء بورڈ کے رکن ہیں۔ انہوں نے آج ذرائع ابلاغ کے نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ ملک میںیکساں سیول کوڈ کے معاملہ کو صرف مسلمانوں کی نظر سے نہیں دیکھیا جانا چاہئے کیونکہ ملک کی یکجہتی میں ہندو‘ دلت و دیگر طبقات کی تہذیب بھی موجود ہے۔  انہوں نے متاکشرا اور دیا بھاگہ تقسیم میراث قوانین کے حوالے اور میزورم و ناگالینڈ کے تہذیبی اختیارات کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ یکساں سیول کوڈ ملک کے لئے بہتر نہیں ہے اور اس سے ملک کی ہمہ تہذیبی شناخت ختم ہو سکتی ہے۔مجلس اتحاد المسلمین نے لاء کمیشن آف انڈیا کے سوالنامہ پر جواب داخل کرنے کا اعلان کرتے ہوئے واضح کیا ہے کہ وہ اس عمل کا حصہ بنے گی اور اپنے موقف سے کمیشن کو واقف کروائے گی۔ بتایا جاتا ہے کہ اس موقف کو اختیار کرتے ہوئے مجلس نے لاء کمیشن کے سوالنامہ کے جواب کا کی تیاری کا عمل بھی شروع کردیا ہے اور صدر مجلس نے کہا کہ جواب تیار ہونے کے بعد کمیشن کو روانہ کردیا جائے گا اور کمیشن کو روانہ کردہ جواب کی تفصیلات سے ذرائع ابلاغ کو بھی واقف کروایا جائے گا۔

TOPPOPULARRECENT