Wednesday , September 19 2018
Home / دنیا / لشکر طیبہ ، طالبان جیسے گروپ عالمی دہشت گرد : امریکہ

لشکر طیبہ ، طالبان جیسے گروپ عالمی دہشت گرد : امریکہ

پاکستان کو ان خطرناک گروپس کے خلاف کارروائی کرنے اسٹیٹ ڈپارٹمنٹ کا مشورہ

واشنگٹن8 فروری (سیاست ڈاٹ کام) امریکہ نے آج پاکستان کی دہشت گرد تنظیموں جیسے طالبان اور لشکر طیبہ سے مربوط 3 انفرادی دہشت گردوں کو عالمی دہشت قرار دیا اور اسلام آباد سے کہاکہ وہ ان انفرادی اور تنظیموں کے خطرناک ٹھکانوں کو ختم کردے۔ آج ان دہشت گردوں کو عالمی دہشت گرد قرار دیئے جانے کے نتیجہ میں ان کی تمام جائیدادوں اور جائیدادوں میں ان تینوں رحمن زیب، فاقر محمد، حزب اللہ استم خاں اور دلاور خاں نادر خاں کے مفادات کو امریکی عدالتوں میں پیش کیا جائے گا اور ان جائیدادوں کو منجمد کردیا گیا۔ امریکی شہریوں کو ان کے ساتھ کسی بھی قسم کے لین دین اور روابط بڑھانے پر بھی امتناع عائد کیا گیا ہے۔ امریکی ڈپارٹمنٹ آف ٹریژری نے ان تینوں کو پاکستان کی دہشت گرد تنظیمیں جیسے لشکر طیبہ اور طالبان سے وابستگی رکھنے پر عالمی دہشت گرد قرار دیا ہے۔ یہ کارروائی امریکہ کی ان کوششوں کے حصہ کے طور پر کی گئی ہے جو جنوبی ایشیاء کے دہشت گردوں کی حمایت کرنے والے نیٹ ورکس کو ختم کرنے کی مہم پر ہے۔ ٹریژری نے مزید کہاکہ امریکہ کی جانب سے ان افراد اور تنظیموں کے خلاف جارحانہ کارروائی کی جائے گی جو دہشت گرد تنظیموں کی مدد کرتے ہیں اور ان کے ساتھ خفیہ غیر قانونی مالیاتی نیٹ ورکس چلاتے ہیں۔ جنوبی ایشیاء بھر میں ان کا یہ نیٹ ورک کام کرتا ہے۔ ٹریژری انڈر سکریٹری برائے دہشت گردی و مالیاتی انٹلی جنس سیگل نڈیلکر نے کہاکہ ان کی جانب سے ان افراد اور تنظیموں کو نشانہ بنایا جارہا ہے جو دہشت گرد تنظیموں کی حکمت عملی پر مبنی منطقی تائید کرتے ہیں۔ دھماکو اشیاء کو فروغ دیتے ہیں اور دیگر طریقوں سے القاعدہ، لشکر طیبہ، طالبان اور دیگر دہشت گرد گروپس کی مالی اعانت و مدد کرتے ہیں۔ امریکہ کی یہ کوشش انتظامی سرحدی کوششوں کا حصہ ہے تاکہ دہشت گرد تنظیموں کو تباہ کرکے ان کے امدادی نیٹ ورک کو ختم کردیا جائے۔ امریکہ نے پاکستان پر زور دیا ہے کہ وہ اپنی سرزمین پر سرگرم ان تنظیموں کے خلاف کارروائی کرے اور ان خطرناک دہشت گردوں کی تنظیموں کو فروغ دینے کی کوشش نہ کرے۔

TOPPOPULARRECENT